US’s CIA plans to strengthen terrorist network in Pakistan through Afghan intelligence NDS and RAW agents

لاہور(رپورٹ اسد مرزا)افغانستان سے امریکی فورسزز کے انخلاءکا وقت قریب آتے ہی امریکی سی آئی اے نے افغان انٹیلی جنس NDSاور ”را“ کے ایجنٹوںکے زریعے پاکستان میں دہشت گردی کے لئے نیٹ ورک کو مضبوط کیا جا رہا ہے تاکہ پاکستان کی جانب سے انکے مطالبات تسلیم نہ کرنے پر پاکستان میںدہشت گردانہ کاروائیوں میں تیزی لا سکے ۔

 

ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکا چاہتا ہے کہ افغانستان سے امریکی فورسزز کے انخلاءسے قبل پاکستان میں اپنے اڈے قائم کر ے، لیکن پاکستان نے اس حوالے سے امریکا کو جواب دیدیا ہے کیونکہ امریکا کی خواہش پوری کرنے پر اپنے سب سے بڑے اتحادی چین اورروس سے ناراضگی مول لینا ہو گی جسکا پاکستان متحمل نہیں ہو سکتا ۔

 

ذرائع کا کہنا ہے کہ افغانستان میں داعش کو بھی مضبوط کرنے کے ساتھ ساتھ پاکستان میں انکے کارندوںکو بھی ایکٹیو کر دیاہے حال ہی میں کوئٹہ میںایک ہوٹل کی پارکنگ میں خودکش حملہ بھی غیر ملکی طاقتوں کا کارستانی ہے ۔ ذرائع کاکہنا ہے کہ امریکا اور پاکستان مخالف انٹیلی جنس ایجنسیاں پاکستان جیسے سیاسی طور پر مستحکم ملک کے مختلف علاقوں میںخانہ جنگی کی صورتحال پیدا کرنا چاہتے ہیں کیونکہ ان مضبوط پاکستان امریکیوں کے مفاد کے منافی ہے ۔

 

اس ضمن میں بلوچستان ، خیبر پختونخواہ کے قبائلی علاقوں میں دہشت گردانہ حملے کروانے کی منصوبہ بندی کی جا چکی ہے جس کے بعد جنوبی پنجاب اور وسطی پنجاب میں بھی امریکا کی سرپرستی میں دہشت گردی کی پلاننگ کے لئے جال بچھایا جا رہا ہے۔دہشت گردوں کو بڑے نیٹ ورک کو بریک کرنے والے پنجاب کے پولیس افسر رائے محمد طاہر کو حکومت پاکستان پہلے ہی آئی جی بلوچستان تعینات کر چکی ہے اور انہوںنے اپنی ٹیم کے کچھ افسران کے بلوچستان تبادلے کروائے ہیں جس سے دہشت گردوں کے نیٹ ورک کو ایک بڑا دھچکا ثابت ہو گا ۔

 

پولیس ریکارڈ کے مطابق آئی جی بلوچستان کی پنجاب میں کاونٹر ٹیرزم کے سربراہ کی حیثیت سے دہشت گردوں کے تمام بڑے نیٹ ورک کو ختم کر کے دم لیا جبکہ انکی باقیات فرار ہو گئی ۔ اس لئے بلوچستان میں اس بہادر افسر کی سربراہی میں دہشت گردی کے خاتمے کے لئے قائم یونٹ تیزی سے کام کر رہا ہے اور جلد ہی انہیں کیفرکرداد تک پہنچا دیا جائیگا ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.