Out-of-control Chinese rocket crashes back to Earth over Indian Ocean

بیجنگ ( ویب ڈیسک ) چین کا بے قابو راکٹ بالآخر زمین پر گر ہی گیا ، لانگ مارچ فائیو بی بحیرہ ہند میں گرا۔الجزیرہ کے مطابق لانگ مارچ فائیو بی کا زیادہ حصہ فضا میں ہی جل گیا تھا۔

چین کے سرکاری میڈیا نے چائنہ مینڈ سپیس انجینئرنگ آفس کے حوالے سے بتایا کہ راکٹ کی 18ٹن وزنی باقیات بیجنگ کے وقت کے مطابق صبح 10.24 (02:24 GTM)پر 72.47 ڈگری مشرق طول بلد اور 2.65 ڈگری شمال عرض بلد میں زمین کی فضائی حدود میں داخل ہوئیں اور ایک سمندری علاقے میں گر گئیں۔

امریکی اور یورپی حکام قریب 8.4 میل یا 13.7کلو میٹر فی سیکنڈ کی رفتار سے گرنے والے راکٹ کی نگرانی کر رہے تھے ۔

گزشتہ روز روسی سپیس ایجنسی نے ممکنہ مقامات کا نقشہ جاری کیا تھا جہاں پر چین کے بے قابو راکٹ کے گرنے کے امکانات تھے ،روسی ایجنسی نے جنوبی ایشیا کے ممالک کو خصوصاً خبردار کیا تھا جبکہ امریکا، لاطینی امریکا، افریقا یا آسٹریلیا بھی راکٹ گرنے کے امکانات ظاہر کئے تھے ۔

ادھر امریکی وزیر دفاع نے کہا تھا کہ ہم راکٹ کو مارگرانے سمیت بہت سی صلاحیتیں رکھتے ہیں لیکن ہم ایسا کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتے ۔ توقع ہے راکٹ سمندر یا اسی قسم کی جگہ گرے گا۔

The discarded body of a Chinese Long March 5B rocket plowed through Earth’s atmosphere Saturday night, making an uncontrolled reentry in the Indian Ocean, west of the Maldives. The US Pentagon had been tracking the rocket body since last week, but because of the unusual tumbling of the rocket body and its orbit, it had been difficult to predict where exactly the huge piece of space junk would fall back to the planet.

Aerospace.org had also been tracking the rocket and, as of Saturday afternoon, predicted it would fall into the Pacific Ocean. According to University of Maryland astronomer Ye Quanzhi, the China National Space Administration confirmed on Weibo the booster had reentered at 7:24 p.m. PT Saturday.

The Weibo post reported that “most of the devices were ablated and destroyed during the re-entry into the atmosphere.”

 

Leave A Reply

Your email address will not be published.