If Shazad Akbar Says Prophet Muhammad ﷺ is last Prophet of Allah, I apologise, Nazir Chohan

لاہور، اسلام آباد ( آن لائن )جہانگیر ترین گروپ کے رکن صوبائی اسمبلی نذیر چوہان نے شہزاد اکبر کی جانب سے مقدمہ درج کرنے کے ردعمل میں کہا ہے کہ ہم نہیں چاہئیں گے کہ قادیانی ہم پر مسلط کئے جائیں،مجھے اس چیز کا خدشہ ہے کہ شہزاد اکبر بھی اسی مسلک سے تعلق رکھتے ہیں یہی وجہ تھی کہ جس پر میں نے ان سے کہا کہ ایک ٹوئٹ کے ذریعے کہہ دیں کہ حضرت محمد ۖ اللہ کے آخری نبی ہیں ،بات کلیئر ہو جائے گی ،اگر شہزاد اکبر ایسے الفاظ کہہ دیتے تو ان سے معافی مانگ لوں گا لیکن شہزاد اکبر نے وضاحت دینے کے بجائے میرے خلاف مقدمہ درج کرادیا۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنے پاکستان کے آئین اور قانون کا پابند ہوں،ان کا کہنا تھا کہ تمام صورت حال سے جہانگیر ترین اور گروپ میں شامل تمام اراکین اسمبلی کو آگاہ کر دیا ہے اور جلد آئندہ کا لائحہ عمل اختیار کروں گا ۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کے مشیر شہزاد اکبر نے ایف آئی آر کی تصویر بھی سوشل میڈیا پر شیئر کرتے ہوئے پیغام جاری کیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ ”کچھ نادان دوست ابھی بھی سوشل میڈیا پہ گمراہ کن باتیں پھیلا رہے ہیں، نیچے دی گئی ایف آئی آر کے مطابق ایک مسلمان شخص پر کفر کی تہمت لگانا تعزیرات پاکستان کے مطابق جرم ہے ،ان کا کہناتھا کہ مذہبی کارڈاستعمال کرنیوالوں کی عوام میں کوئی جگہ نہیں ہونی چاہیے،نذیرچوہان کیخلاف مقدمہ درج ہوچکا ہے۔

دوسری جانب وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے مشیر احتساب شہزاد اکبر کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف کے رکن صوبائی اسمبلی نذیر کے خلاف مقدمے کے اندراج پر موقف دیتے ہوئے کہا کہ ذاتی انتقام کے لیے مذہبی کارڈکا استعمال کرناقابل مذمت ہے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کئے گئے پیغام میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ذاتی انتقام کے لیے مذہبی کارڈکا استعمال کرناقابل مذمت ہے،پولیس کو ایم پی اے نذیرچوہان کیخلاف سخت کارروائی کرنی چاہیے۔ مشیرداخلہ شہزاداکبراپناکام بہتراندازسے کررہے ہیں،اپنے آفیشلزکے دفاع میں ناکامی پرریاست اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کرسکتی۔

Lahore, Islamabad (Online) Jahangir Tareen Group Member Provincial Assembly Nazir Chauhan in response to the case filed by Shehzad Akbar has said that we do not want Qadianis to be imposed on us, I am afraid of this. That Shahzad Akbar also belongs to the same sect was the reason why I asked him to say through a tweet that Hazrat Muhammad is the last prophet of Allah, the matter will be clear, if Shahzad Akbar says such words I would have apologized to them but instead of giving an explanation, Shahzad Akbar filed a case against me. He said that he was abiding by the constitution and law of Pakistan. He said that he had informed Jahangir Tareen and all the members of the group about the situation and would soon take action.

On the other hand, Shehzad Akbar, Advisor to Prime Minister Imran Khan, shared a picture of the FIR on social media and issued a message in which he said, “Some ignorant friends are still spreading misleading things on social media, below. According to the FIR, slandering a Muslim person for blasphemy is a crime under Pakistan’s penal code. He said that those who use religious cards should have no place in the public. A case has been registered against Nazir Chauhan.

On the other hand, Federal Minister for Information Fawad Chaudhry, while taking a stand on the registration of a case against Nazir, a member of Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) Provincial Assembly, by Accountability Advisor Shehzad Akbar, said that using religious cards for personal revenge is reprehensible. In a message released on social networking site Twitter, Fawad Chaudhry said that the use of religious cards for personal revenge was reprehensible and the police should take stern action against MPA Nazir Chauhan. Home Minister Shehzad Akbar is doing his job well. The state cannot fulfill its responsibilities due to failure to defend its officials.

Leave A Reply

Your email address will not be published.