Pakistan bends again as it grants US warplanes access to its skies

اسلام آباد (آن لائن) امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات کی بہتری کیلئے پاکستان نے امریکی جنگی جہازوں کو طالبان کے خلاف افغانستان میں لڑنے والی فورسز کی مدد کیلئے اپنی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت دے دی۔

یہ حیران کن دعوٰی چینی اخبار ’ساؤتھ چائنہ مارننگ پوسٹ‘ نے کیا ہے، جس کے مطابق 20 سال پرانے معاہدے کی تجدید نو کے بعد دیکھا گیا ہے کہ امریکہ کے جنگی طیاروں نے مئی کے پہلے ہفتے میں کم از کم ایک بار افغان صوبے ہلمند میں طالبان پر بمباری کی ہے۔ اس بارے میں پاکستان کے کئی صحافیوں نے سوشل میڈیا پر بھی بات کی ہے۔ پاکستانی صحافیوں کا کہنا ہے کہ امریکی فضائیہ کو پاکستان کی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت ایک ایسے وقت میں دی گئی ہے جب امریکہ نے شمسی ایئر بیس تک دوبارہ رسائی کی درخواست کی تھی۔ یہ ایئر بیس چین کے زیر انتظام گوادر کی بندرگاہ سے 400 کلومیٹر شمال مغرب کی طرف واقع ہے۔

خیال رہے کہ سابق آمر پرویز مشرف نے امریکہ کو 2002 میں شمسی ایئر بیس کے ساتھ ساتھ جیکب آباد میں موجود بیس بھی استعمال کرنے کی اجازت دی تھی۔

اخبار نے اسلام آباد میں مقیم دو اعلیٰ ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ واشنگٹن حکام نے مارچ میں اس وقت شمسی ایئر بیس کے استعمال کی اجازت مانگی تھی جب ان کی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات ہوئی تھی۔ امریکہ نے اسی عرصے کے دوران ازبکستان اور تاجکستان سے بھی اڈے مانگے تھے تاکہ 11 ستمبر کو امریکی افواج کے انخلا کے بعد بھی افغانستان پر نظر رکھی جاسکے تاہم دونوں ملکوں نے امریکی درخواست مسترد کردی تھی۔

ISLAMABAD: To improve its relations with the United States, Pakistan has allowed US warplanes to use its airspace to support forces fighting the Taliban in Afghanistan.

The shocking claim was made by the Chinese newspaper South China Morning Post, which said that after the renewal of the 20-year-old agreement, US warplanes had flown at least once in the first week of May in the Afghan province of Helmand. I have bombed the Taliban. Many Pakistani journalists have also spoken about this on social media. Pakistani journalists say the US Air Force has been allowed to use Pakistan’s airspace at a time when the United States has requested re-access to the solar air base. The airbase is located 400 km northwest of the Chinese-run port of Gwadar.

It may be recalled that former dictator Pervez Musharraf had allowed the United States to use the solar air base as well as the Jacobabad base in 2002.

The newspaper, citing two senior sources based in Islamabad, claimed that Washington officials had sought permission to use the solar air base in March when they met with Army Chief General Qamar Javed Bajwa. The United States also requested bases from Uzbekistan and Tajikistan during the same period to keep an eye on Afghanistan after the withdrawal of US troops on September 11, but both countries rejected the US request.

Leave A Reply

Your email address will not be published.