MPA Jugnu Mohsin’s convoy attacked by armed assailants in Okara

حجرہ شاہ مقیم (این این آئی)اوکاڑہ کے علاقے حجرہ شاہ مقیم میں رکن پنجاب اسمبلی جگنو محسن کے قافلے پر حملہ کیا گیا جبکہ رکن اسمبلی سمیت قافلے میں شامل تمام افراد محفوظ رہے۔ایم پی اے جگنو محسن کی گاڑی پرحملے کا مقدمہ حافط عرفان حسین کی مدعیت میں درج کیا گیا۔ تھانہ حجرہ شاہ مقیم میں درج ایف آئی آر کے مطابق ایم پی اے جگنو محسن جلسے میں شرکت کیلئے جھجھ کلاں جا رہی تھیں کہ حجرہ موڑ کے قریب یاسین اور 6 نامعلوم ملزمان نے حملہ کر دیا۔ ایف آر میں کہا گیا کہ دو ملزمان آتشیں اسلحے اور دو لاٹھیوں سے لیس تھے، دو نے پتھر اٹھا رکھے تھے۔مقدمے میں کہا گیا ہے کہ ملزمان نے گولی چلائی جو گاڑی کو نہ لگی تو ایک حملہ آور نے لاٹھی مار کر گاڑی کا شیشہ توڑ دیا۔

ایف آئی آر کے مطابق نامعلوم افراد نے سوشل میڈیا پرکہاتھاکہ یہاں آئے تو جان سے ماردیں گے۔حملے میں جگنو محسن اور قافلے میں شامل تمام افراد محفوظ رہے۔دوسری جانب پولیس نے کارروائی کر کے دو ملزمان مختار اور سلطان کو گرفتار کر لیا۔ دوسری جانب مسلم لیگ (ن) نے ٹرین حادثے کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کے مطالبے اورقیمتی جانوں کی ضیاع پر اظہار افسوس کی قرارداد پنجاب اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کر ادی۔رکن اسمبلی حناپرویز بٹ کی جانب سے جمع کرائی گئی قرارداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ مشکل کی اس گھڑی میں غمزدہ متاثرہ خاندانوں کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں،افسوسناک حادثے میں جاں بحق افراد کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی اور اظہار تعزیت کرتے ہیں۔

مطالبہ ہے کہ ٹرین حادثے کی تحقیقات کیلئے اعلی سطحی کمیٹی تشکیل دی جائے،تحقیقاتی کمیٹی میں وزیر ریلوے اورجی ایم ریلوے کو طلب کیا جائے۔کورونا فنڈز کی آڈٹ رپورٹ پبلک کرنے کے مطالبے کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کروادی گئی۔مسلم لیگ(ن)کی رکن سمیرا کومل کی جانب سے جمع کرائی گئی قرار دا دکے متن میں کہا گیا ہے کہ وفاقی حکومت نے کورونا فنڈز سے ایک بھی حفاظتی کٹس یا ویکسین نہیں خریدی،طبی عملہ مسلسل ایک سال تک کورونا کٹس کی فراہمی کا مطالبہ کرتا رہا۔حکومت کی کوتاہی کے باعث سینکڑوں ڈاکٹر،نرسیں اور میڈکل سٹاف کورونا سے ہلاک ہوئے۔ قراردا دمیں مطالبہ کیاگیاکہ کورونا فنڈز کی مد میں ملنے والی ملکی اور غیر ملکی امداد کی آڈٹ رپورٹ منظر عام پر لائی جائے اورکورونا فنڈز میں 1200ارب روپے کی تفصیلات عام کے سامنے لائی جائیں۔

Punjab Assembly lawmaker Syeda Maimanat Mohsin, more commonly known by her pseudonym Jugnu Mohsin, was attacked by armed assailants in Okara over a “political rivalry” on Sunday evening , police said. She remained unhurt in the incident.

Leave A Reply

Your email address will not be published.