اندیشہ درست ثابت ہوا۔۔!! آرمی چیف نے پارلیمانی رہنماؤں سے ملاقات میں مولانا فضل الرحمان کے بیٹے سے کیا کہا؟ حیران کُن انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ڈی جی آئی ایس آئی جنرل فیض حمید کی پارلیمانی رہنماؤں سے ہونے والی ملاقات اور اس دوران ہونے والی گفتگو پاکستانی میڈیا کی زینت بنی ہوئی ہے۔ وزیر ریلوے شیخ رشید نے جیو نیوز کے پروگرام ’آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ‘

میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمانی رہنماؤں کے ساتھ ملاقات میں آرمی چیف نے مولانا فضل الرحمان کے بیٹے سے کہا تھا کہ اگر صدارتی ووٹ لینا ہو تو اسمبلیاں حلال ہو جاتی ہیں اور اگر ناکام ہوں تو اسمبلیاں حرام ہو جاتی ہیں۔ شیخ رشید کا کہنا تھا آرمی چیف نے کہا کہ ہمیں کسی مسئلے میں نہ لائیں، سیاسی معاملات میں آپ جانیں اور آپ کا کام جانے، سیاست فوج کا کام نہیں۔ وفاقی وزیر کے بقول جنرل قمر جاوید باجوہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہمیں سول حکومت بلائے گی تو لبیک کہیں گے۔

اپوزیشن کے اسمبلیوں سے استعفوں سے متعلق سوال پر شیخ رشید نے کہا کہ لکھ کر لے لیں کہ پیپلز پارٹی اسمبلیوں سے استعفیٰ نہیں دے گی۔ ایک اور انٹرویو میں شیخ رشید احمد نے کہا کہ آرمی چیف سے ملاقات کے دوران شرکاء میں سے ایک کو کہا گیا آپ نے الیکشن کی رات فون کیا۔ شیخ رشید نے کہا کہ عسکری قیادت کو فون کرنے والے پارلیمنٹیرین کا نام خواجہ آصف ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس فون پر عسکری قیادت نے خواجہ آصف سے کہا کہ دھاندلی نہیں ہو گی اور پھر خواجہ آصف جیتے۔

شیخ رشید نے کہا کہ نواز شریف نے جونیجو کی کمر میں چھرا گھونپا اور پھر خود آکر حکومت بنائی۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف اپنے بھائی شہباز شریف کی سیاسی کشتی میں پتھر پھینکنے ہیں، اپوزیشن دھرنا نہیں دے گی۔وفاقی وزیر نے کہا کہ مریم نواز کا ٹوئٹر ایک سال بند رہا، انہیں توقع تھی کہ شاید صاحبزادی کو لندن جان کی اجازت مل جائے۔ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن چاہتی ہے کہ عمران خان کو سینیٹ میں اکثریت حاصل نہ ہو لیکن مارچ کے انتخابات میں پی ٹی آئی سینیٹ میں اکثریتی جماعت ہوگی۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
تبصرے
Loading...