- Advertisement -

ضمنی انتخابات میں امن وامان کی صورت حال کو ہر صورت یقینی بنایا جائے گا: وزیر داخلہ

- Advertisement -

وفاقی وزیرداخلہ رانا ثنا اللہ کی زیر صدارت 17 جولائی کے ضمنی انتخابات میں امن وامان کے انتظامات کے حوالے سے خصوصی اجلاس منعقد ہوا جس میں ضمنی انتخابات میں امن وامان کی صورت حال کو ہر صورت یقینی بنایا جائے گا۔
اجلاس میں وزیرداخلہ پنجاب عطااللہ تارڑ، سیکرٹری داخلہ یوسف نسیم کھوکھر، چیف سیکرٹری پنجاب کامران علی افضل ،آئی جی پولیس پنجاب راؤ سردار علی خان،اور اعلیٰ فوجی حکام سمیت دیگر حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں 17 جولائی کے ضمنی انتخابات کے دوران امن وامان کے حوالے سے انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔
اجلاس میں ضمنی انتخابات کے حلقوں میں سیکیورٹی فورسز کی تعیناتی کے حوالے سے چیف الیکشن کمشنر کے مراسلے کابھی جائزہ لیا گیا اجلاس میں انتہائی حساس حلقوں میں سیکیورٹی فورسز کی اضافی نفری تعینات کرنے کا بھی جائزہ لیا گیا۔
اجلاس میں شرکاء کی طرف سے 17 جولائی کےضمنی انتخابات کے حلقوں میں سیکیورٹی انتظامات پراطمینان کااظہارکیا گیا۔ اور ضمنی انتخابات کے دوران امن وامان کو یقینی بنانے الیکشن کے ماحول کو سازگار بنانے کیلئے اہم فیصلے کئے گئے۔
ضمنی انتخابات کے دوران امن امان کیلئے رینجرز کے علاوہ فرنٹیر کانسٹیبلری تعینات کرنے اور پنجاب اور سندھ کے ضمنی انتخابات کے تمام حلقوں میں آتشی اسلحہ کی نمائش؛ ساتھ رکھنے پرمکمل پابندی اور آتشی اسلحہ پابندی احکامات کی خلاف ورزی پرفوری گرفتاری ،اسلحہ ضبطگی اورلائسنس منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔
اجلاس میں انٹیلیجنس رپورٹس کی بنیاد پر شرپسند عناصر کی ضمنی انتخابات کے حلقوں میں داخلے پر پابندی لگانے اور گجرات سے لاہور میں لائے گئے 300 اسلحہ بردارافراد کے حوالے سے رپورٹس کا بھی جائزہ اور ایسے مسلح افراد کی ضمنی الیکشن کے دوران امن وامان پراثر انداز ہونے کے باعث پیشگی اقدامات لینے کا فیصلہ کیا گیا۔
امن وامان کی صورت حال کو مسلسل مانیٹر کرنے کیلئے وزارتِ داخلہ میں 16 اور17 جولائی کیلئے خصوصی کنٹرول روم قائم کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا
وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے وفاقی سیکرٹری داخلہ کو اجلاس میں لئے گئے فیصلوں پرعملدرآمد کیلئے ہدایات بھی جاری کر دی۔
اس حوالے سے وزیرداخلہ رانا ثنا اللہ کا کہنا تھاکہ امن وامان کی صورتحال یقینی بنانا ہماری قومی ذمہ داری ہے اور ضمنی انتخابات کے دوران سکیورٹی انتظامات کیلئے تمام وسائل بروئے کارلائیں گے۔
انہوں نے کہا کہ سول آرمڈ فورسز امن وامان کیلئے سندھ اور پنجاب حکومت کی مکمل معاونت کریں گی، پنجاب کے 6 انتہائی احساس حلقوں میں سکیورٹی کی اضافی نفری تعینات ہوگی، ان حلقوں میں لاہور کے 4، بھکر اور ملتان کا ایک ایک حلقہ شامل ہے۔
وزیرداخلہ کا کہنا تھاکہ کسی شخص کو اسلحہ کی نمائش یا ساتھ رکھنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور انتخابی حلقوں میں شرپسند عناصراوراسلحہ بردارافراد کی موجودگی کسی صورت قبول نہیں۔
انہوں نے ہدایت کی کہ دوسرے صوبوں سے لائے گئے شر پسند عناصر پرکڑی نظررکھی جائے اور گجرات سے لائے گئے 300 مسلح افراد سے متعلق بھی پیشگی اقدامات کیے جائیں۔
خیال رہے کہ پنجاب میں ضمنی الیکشن 17 جولائی کو ہوں گے، یہ نشستیں پی ٹی آئی کے منحرف ارکان پنجاب اسمبلی کے ڈی سیٹ ہونے پر خالی ہوئی تھیں۔