پی ڈی ایم تقسیم۔۔۔ ملکی سیاست میں زلزلہ، بھونچال مچا دینے والی خبر آگئی

لاہور (ویب ڈیسک) سینئر صحافی و تجزیہ کار رانا محمد عظیم نے کہا ہے کراچی کے جلسے میں اپوزیشن میں سخت اختلافات پیدا ہوئے ، چھوٹی جماعتوں کو تحفظات ہیں کہ ہمیں کسی فیصلے میں لیا ہی نہیں جاتا۔ پروگرام دی لاسٹ آور میں اینکر پرسن یاسر رشید سے گفتگو میں انہوں نے کہا 25اکتوبر کے جلسے کے بعد

چھوٹی جماعتیں اجلاس بلاکر فضل الرحمان پر عدم اعتماد کریں گی، فضل الرحمان اپنی پارٹی کے چند لوگوں سے استعفے لینگے اور وہ بھی صرف دکھانے کیلئے ،پیپلز پارٹی نے تو کہہ دیا ہے کہ ہم کوئی غیر آئینی کام نہیں کرینگے ۔ رائو خالد نے کہا میں نے پہلے دن ہی کہا تھا پی ڈی ایم تقسیم ہوگی،ان کا ایجنڈا قابل عمل ہی نہیں،یہ ہی کلیئر نہیں کہ ان کا مقصد کیا ہے ،کیا یہ عمران خان کی حکومت ہٹانا چاہتے ہیں، اگر یہ ہٹا لیتے ہیں تواس کے بعد ان کا ایجنڈا کیا ہوگا، سب کے اپنے اپنے مفادات ہیں۔

ایڈیٹر سعید خاور نے کہا جو جلسے اپوزیشن کے ہوئے ہیں ان میں اچھی تقریریں چھوٹی جماعتوں کے نمائندوں کی تھیں مگر وہ رپورٹ ہی نہیں ہوئیں،اگر چھوٹی پارٹیوں کی آواز آگے تک نہ پہنچائی گئی تو اختلافات سامنے آجائینگے ،گلگت بلتستان کے الیکشن میں پیپلز پارٹی کیلئے حمایت موجود ہے ،یہ وہاں پر ایک دوسرے کیخلاف صف آرا ہونگے ۔ سہیل اقبال بھٹی نے کہا کوئٹہ اور پشاور کے جلسوں کی پلاننگ ہورہی ہے کہ وہاں پر کچھ ایسے نعرے لگائے جائیں جو بہت خطرناک ہوسکتے ہیں،نعرے بازی رکوانے کیلئے پی ڈی ایم میں شریک کچھ جماعتوں سے باضابطہ طور پر رابطہ کیا گیا،

رینٹل پاورمعاہدوں میں کرپشن کی بھرمار کی گئی ،نیب کی ٹیم نے تحقیقات کیں ،بہت سے کیسز میں ریفرنسز فائل ہوچکے ہیں،لاکڑا پاور ریفرنس بارے سپریم کورٹ نے ہدایت کی کہ ڈے ٹو ڈے اس کیس کی سماعت کی جائے ،یہ پاکستانی حکومت کی سرکاری کمپنی تھی جس نے کار کے رینٹل پاور کمپنی کے ساتھ 231میگا واٹ بجلی کا کنٹریکٹ سائن کیا،کمپنی کے پاس پیسے نہیں تھے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
تبصرے
Loading...