جعل سازوں نے لوگوں کو لوٹنے کے لیے جعلی کورونا وائرس ویکسین لگانی شروع کر دی

برطانوی جعل سازوں نے لوگوں کو لوٹنے کے لیے جعلی کورونا وائرس ویکسین لگانی شروع کر دی۔
برطانیہ کے فراڈیے جعلی COVID ویکسینز فروخت کر کے لوگوں کو دھوکا دے رہے ہیں، برطانوی وزیر صحت نے آج اس سلسلے میں کہا کہ جعل ساز لوگوں کو جعلی ویکسین فراہم کر کے لوٹ رہے ہیں، چند افراد نے رقم کے عوض غیر شناخت شدہ ویکسینز لگوائی ہیں۔
برطانیہ بھر میں اس وقت ریاستی ادارے نیشنل ہیلتھ سروس کے ذریعے کرونا ویکسی نیشن کا بڑا پروگرام جاری ہے، جس کے تحت شہریوں کو مفت ویکسین فراہم کی جار ہی ہے۔
برطانوی وزیر صحت واہان گیتھنگ نے آج ایک بریفنگ میں کہا کہ جعل سازوں نے کرونا ویکسین کو بھی نشانہ بنا لیا ہے، جو نہایت گھناؤنا فعل ہے، لوگوں کو جعلی ویکسین دے کر لوٹا گیا اور انھوں نے بھی وہ ویکسین اپنے بازوؤں میں لگوا لی۔
انھوں نے کہا میں یہ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ این ایچ ایس کو وِڈ ویکسین کے لیے کبھی آپ سے پیسے طلب نہیں کرے گا، یہ بالکل مفت ہے، نہ ہی آپ سے بینک کی تفصیلات مانگی جائے گی، نہ ہی این ایچ ایس اسٹاف کی شناخت کے بغیر آپ کے گھر پر ویکسین پہنچائی جا رہی ہے۔
وزیر صحت کی جانب سے یہ تنبیہ گزشتہ ہفتے کی نیشنل کرائم ایجنسی کی تنبیہ کے بعد آئی ہے، جس میں عوام کو جعل سازوں سے محتاط رہنے کے لیے کہا گیا تھا کہ وہ کچھ معمر اور خطرے سے دوچار لوگوں کو رقم کے عوض ویکسین کی فراہمی کے لیے کہتے پھر رہے ہیں، اور ان کے پاس کوئی ویکسین نہیں۔
این سی اے کے حکام کا کہنا ہے کہ کرونا ویکسین کے فراڈ کے کیسز کی تعداد فی الوقت تو بہت کم ہے تاہم اس میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔
لندن پولیس نے جمعے کو کہا تھا کہ ایک جعل ساز نے گھر پر ایک 92 سالہ خاتون سے 160 پاؤنڈز لے کر ان کے بازو میں ویکسین کے نام پر کچھ لگا دیا تھا۔
واضح رہے کہ برطانیہ اس وقت کرونا وائرس کی نئی قسم کے انفیکشن سے شدید متاثر ہے، اور اب تک وائرس سے 81 ہزار شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

تبصرے
Loading...