دُبئی ائیر پور ٹ پر پاکستانی نوجوان سے 2 کلو چرس برآمد منشیا ت اسمگلنگ کا انوکھا طریقہ جان کر پولیس بھی حیران

متحدہ عرب امارات میں ہر سال منشیات کی بھاری مقدار پکڑی گئی ہے، جس سے پتا چلتا ہے کہ کسٹمز حکام بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔اماراتی ریاستوں میں منشیات کی اسمگلنگ روکنے کے لیے گزشتہ دو برسوں کے دوران نیا میکنزم اختیار کیا گیا جس کے باعث بیرون ملک سے منشیات اسمگلنگ کی بڑی کارروائیاں ناکام بنائی جا چکی ہیں۔

اس کی ایک وجہ منشیات کی نشاندہی کے لیے جدید ترین ٹیکنالوجی کا استعمال بھی ہے۔ دُبئی ایئرپورٹ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ پاکستان سے آنے والے ایک نوجوان اسمگلر کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ کسٹمز حکام کے مطابق 26 سالہ نوجوان کے پاس موجود لکڑی کے مختلف باکسز تھے جن میں بظاہر پھل بھرے ہوئے تھے، مگر ان پھلوں کے ساتھ ہی بڑی ہوشیاری سے منشیات بھی رکھی گئی تھی۔

فروٹ باکسز کی سکیننگ کے دوران شک ہونے پر جب ان کی تلاش لی گئی تو ان میں بڑی مہارت سے چھپائی گئی چرس برآمد ہوئی جس کے بعدپاکستانی نوجوان کو فوری طور پر گرفتار کر لیا گیا۔مقدمے کی سماعت کے دوران ایک کسٹمز اہلکار نے بتایا کہ لکڑی کا ایک باکس ایک جانب سے بہت زیادہ پھولا ہوا نظر آیا۔ شک پڑنے پر جب اس باکس کو کھول کر چیک کیا گیا تو اس میں سے چرس کی بڑی مقدار برآمد ہوئی۔

جسے فوری طور پر فارنزک لیبارٹری بھجوایا گیا۔لیبارٹری حکام نے اس کے چرس ہونے کی تصدیق کر دی۔ گرفتار نوجوان کو پہلے کسٹمز ڈائریکٹوریٹ منتقل کیا گیا۔ پھر اس پر مقدمہ چلانے کے لیے استغاثہ کے حوالے کیا گیا تھا۔ استغاثہ نے ملزم پر منشیات رکھنے اور اس کی اسمگلنگ کرنے کے الزامات عائد کیے گئے ہیں۔ اس معاملے کی اگلی سماعت 11 فروری 2021کو ہو گی۔ استغاثہ کے مطابق ملزم کے خلاف موجود شواہد اسے کئی سال کی سزا دلوانے کے لیے کافی ہیں

تبصرے
Loading...