- Advertisement -

یہ نہیں ہوسکتا کہ تین شخص ملک کی قسمت کا فیصلہ کریں: بلاول بھٹو

- Advertisement -

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ پنجاب اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ کے خلاف کیس میں ہم فل کورٹ بینچ کا مطالبہ کرتے ہیں، یہ نہیں ہوسکتا کہ 3 افراد ملک کی تقدیر کا فیصلہ کریں۔
بلاول بھٹو نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس میں بات کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں آئین کو بحال کرنے کے لیے 30سال جدوجہد کرنا پڑتی ہے، اتحادی جماعتیں جمہوری نظام چا ہتی ہیں لیکن نظر آرہا ہے کہ کچھ افراد کو جمہوری نظام ہضم نہیں ہورہا ہے، ون یونٹ نظام آپ سے برداشت نہیں ہورہا، آپ سے برداشت نہیں ہو رہا کہ آپ کے سلیکٹڈ نے تاریخی قرض لیا۔
ہم نے نہ تو تشدد کا راستہ اپنایا نہ ہی غیر مناسب زبان استعمال کی ، مریم نواز کو جیل میں ڈالا گیا، فریال تالپور کو رات کو گھسیٹ کر قیدمیں رکھا گیا، 4سال ظلم کےباوجودہم نےصبر کا دامن نہیں چھوڑا، عمران خان کوسامنے رکھ کےاس ملک میں مہم چلائی جارہی ہے، ملک کیخلاف کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونےدیں گے۔
ہم چاہتے ہیں ہمارے ادارے غیر متنازعہ رہیں، اس لیے تمام سیاسی جماعتیں فل بینچ کا مطالبہ کرتی ہیں،، فل بینچ کا جو بھی فیصلہ ہوگا ہمیں قبول ہوگا، عمران خان کے دباؤ میں آکے آئین کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا۔