پنجاب حکومت گرانے کی سازش بے نقاب وزیر گرفتار۔۔دیگر ارکان اسمبلی کی مانیٹرنگ شروع وزیر اعظم کو خفیہ ایجنسی نےثبوت ،شواہد ،اور کالوں کا ریکارڈ فراہم کر دیا

لاہور( رپورٹ :اسد مرزا) ملک کی اہم خفیہ ایجنسی نے پنجاب حکومت کے خلاف ساز ش ناکام بناتے ہوئے ایک حکومتی وزیر کا نام اور ثبوت وزیر اعظم کو پیش کر دیئےجس کی بنا پر صوبائی وزیر کو گرفتار کر لیا گیا ہے جس سے تحریک انصاف پنجاب کے بعض ارکان اسمبلی میں ہلچل مچ گئی اور انہوں نے اپنی سرگرمیاں محدود کر دی.

باخبر ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ تحریک انصاف کے رہنما اور سابق سنیئر صوبائی وزیر علیم خان پنجاب کی وزارت اعلی کے امیدوار تھے تاہم عثمان بزدار کے وزیر اعلی پنجاب بننے کے بعد انہوں نے فاروڈ بلاک کے لئے کوشش شروع کر دی اس حوالے سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہی سے بھی ملاقاتیں ہو تی رہی ۔ جسکا مقصد عثمان بزدارکی حکومت گرانا تھا ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک خفیہ ایجنسی نے سنیئر صوبائی وزیر علیم خان کی تحریک انصاف اور ق لیگ کے ارکان اسمبلی سے خفیہ ملاقاتوں میں عثمان بزدار کے خلاف ہونے والی سازش کے حوالے سے ریکارڈنگ تصاویر فون کالز کا ریکارڈ اوراہم میڈیا پرسن سے ملکر پنجاب حکومت کو ناکام ثابت کرنے کے لئے سانحہ ساہیوال پر پروگرام کروائے جن میں بعض پولیس افسران نے اس بارے رپورٹس فراہم کیں جبکہ دیگر حکومتی معاملات پر ساز باز ہو کرپروگرام کروانے بارے تما م شواہد اور ثبوت وزیر اعظم عمران خان کو فراہم کر دیئے جس پر وزیر اعظم نے علیم خان کو پارٹی سے الگ کرنے کا فیصلہ کر لیا تھا ۔بتایا گیا ہے کہ ان انکشافات کے بعد آمدن سے ذائد اثاثوں کے کیس میں سنیئر صوبائی وزیر علیم خان نیب میں پیشی کے دورن گرفتار ہو گئے ۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں