اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصرکا عہدہ خطرے میں پڑ گیا ۔۔۔ جانتے ہیں اسپیکر بننے کیلئے وزیر اعظم سے کیا وعدہ کیا تھا جو پورا نہ کرسکے ؟

اسلام آباد (ویب ڈیسک) : دو روز قبل خبر سامنے آئی تھی کہ جمعرات کو ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان غصے میں نظر آئے تھے۔انہوں نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی کارگردگی پر مایوسی کا اظہار کیا تھا۔تاہم اب وزیراعظم کی اسد قیصر سے ناراضی کی وجہ سامنے آ گئی۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ اسد قیصر جن وعدوں پر اسپیکر قومی اسمبلی بنے تھے وہ پورے نہیں کر رہے۔

پی ٹی آئی ذرائع کے مطابق اسد قیصر نے اپوزیشن کو ٹف ٹائم دینے کا دعوی کیا تھا۔اسد قیصر ایوان کا ماحول حکومت کے حق میں بہتر بنانے کا وعدہ بھی پورا نہ کر سکے۔جب کہ شہباز شریف کی اسلام آباد میں مسلسل موجودگی سے بھی عمران خان پریشان ہیں۔ارکان اسمبلی نے بھی وزیراعظم عمران خان سے شکایت کی ہے کہ وہ حکومتی ارکان کو کم جب کہ اپوزیشن جماعت کو زیادہ وقت دیتے ہیں۔

شیخ رشید بھی اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے خلاف بیان دے چکے ہیں۔تاہم اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا تھا کہ شیخ رشیدکی اپنی پارٹی ہے،ان کی مرضی جوبھی کہیں۔میں رولزکےمطابق کام کروں گا،کسی سےڈکٹیشن نہیں لوں گا۔انکا مزید کہنا تھا کہ تمام معاملات پروزیراعظم عمران خان سے بات کروں گا۔ واضح رہے وزیراعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں دو وزراء کی کارگردگی پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔

۔وزیراعظم نے کہا کہ غلط کام کرنے والوں کا دفاع نہیں کیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان نے یہ بھی کہا کہ جو چھوڑ کر جانا چاہتا ہے چلا جائے کسی کو نہیں روکا جائے گا۔ میں نے نہ تو خود غلط کام کیا اور نہ ہی کسی اور کو کرنے دوں گا۔کرپشن کرنے والے کے لیے کوئی معافی نہیں ہے۔وزیراعظم عمران خان قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر کی کارگاردگی سے بھی مایوس نظر آئے۔وزراء وزیراعظم کو قائل کرنے میں ناکام رہے۔وزیراعظم نے وزراء کو چپ رہ کر بات سننے کی ہدایت کی۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں