سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانے والوں کے خلاف کریک ڈاﺅن شروع وزیراعظم عمران خان کے خلاف نفرت انگیز تقاریر کرنے والے 4 افراد کو گرفتار کر لیا گیا

ملتان (ویب ڈیسک) : وفاقی وزیر فواد چوہدری کے اعلان کے اگلے ہی روز گرفتاریاں شروع ہو گئی ہیں۔وزیراعظم عمران خان کے خلاف نفرت انگیز تقاریر کرنے والے 4 افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق چاروں افراد کی تقریریں سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھیں جس کے بعد انہیں گرفتار کیا گیا۔چاروں افراد پر الزام ہے کہ انہوں نے وزیراعظم عمران خان کے خلاف نفرت انگیز مواد پر مبنی تقریر کی جس کے بعد اسے وائرل کر دیا۔

پولیس نے مذکورہ افراد کو حراست میں لے لیا اور مقدمہ درج کر لیا ہے۔واضح رہے گذشتہ روز وفاقی حکومت نے سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانےوالوں کے خلاف کریک ڈاﺅن شروع کرنے کا اعلان کیا تھا۔

،وفاقی وزیراطلاعات فوادچوہدری نے اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی لا محدود نہیں ،کسی کونفرت کا پرچار کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی. انہوں نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا پر نفرت آمیز مواد کو کنٹرول کیا جائےگا ایک نظام بنا لیا ہے جس کےذریعے سوشل میڈیا پرنفرت کا پرچار بھی روکا جاسکے گا،سوشل میڈیا پر دھمکیاں اور فتوے دینے پر بعض افراد کو گرفتار کیا گیا ہے. وزیر اطلاعات نے کہا کہ برصغیرمیں اسلام کی ترویج صوفیاکرام کے ذریعے ہوئی،شدت پسندی ایک حالیہ لہر تھی ،ہمارے لیے مسئلہ اس وقت پیش آیا جب ہم افغان تنازع میں پھنس گئے.

انہوں نے کہا کہ غیرمتعلقہ تنازع میں پھنسنے سے شکوک وشبہات پیداہوئے،دنیا کے مختلف معاشرے انتہا پسندی کا شکار ہیں ،بھارت میں مودی کی حکومت آنے کے بعد انتہا پسندی میں اضافہ ہوا جبکہ اسلام میں انتہا پسندی اور شدت پسندی کی کوئی جگہ نہیں،ہماری برداشت اور حوصلے کی تاریخ بہت پرانی ہے. فوادچوہدری نے کہا کہ کسی اورپراپنی رائے مسلط کرنے سے مسائل جنم لیتے ہیں،دنیا بھرمیں ہرآزادی کی ایک حد ہے،اظہار رائے کی آزادی لا محدود نہیں ،اس ہفتے میں سوشل میڈیا پرنفرت پھیلانے کے الزام میں اہم گرفتاریاں ہوئی ہیں. انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیاآہستہ آہستہ پورے معاشرے پر حاوی ہوتا جارہا ہے ، طریقہ کار تیار کرلیا ہے جس سے سوشل میڈیاپرنفرت انگیزی کنٹرول ہوگی.

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں