- Advertisement -

دہشتگرد کارروائیوں میں متحرک تنظیموں کی تفصیلات سینیٹ میں پیش

- Advertisement -

وزارت داخلہ نے 2019 سے 2021 کے دوران دہشتگرد کارروائیوں میں متحرک تنظیموں کی تفصیلات سینیٹ میں پیش کر دیں۔
وزارت داخلہ کی جانب سے سینیٹ میں جمع کرائے گئے تحریری جواب میں بتایا گیا ہے کہ 2019 سے 2019 کے دوران اہلسنت و الجماعت، القاعدہ، بلوچستان لبریشن آرمی دہشتگردی میں ملوث پائی گئیں۔ اس کے علاوہ بی ایل ایف، بی آر اے ایس، بلوچستان ریپبلکن آرمی بھی دہشتگردی میں متحرک پائی گئیں۔
وزارت داخلہ کی رپورٹ کے مطابق حزب الاحرار، حزب التحریر، جیش اسلام، جماعت الاحرار، جئے سندھ قومی محاذ، جنداللہ، لشکر جھنگوی، لشکر اسلامی، سندھو دیش انقلابی آرمی بھی دہشتگردی میں متحرک پائی گئیں۔
سینیٹ میں جمع کرائی گئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سپاہ صحابہ، سپاہ محمد، تحریک جعفریہ پاکستان اور تحریک طالبان پاکستان کے علاوہ یونائیڈ بلوچ آرمی اور زینبیون بریگیڈ دہشتگردی کی کارروائیوں میں متحرک پائی گئیں۔