ریڑھ کی ہڈی سمجھی جانیوالی سمجھی جانے والی شخصیت نے آفتاب اقبال کےچینل’’آپ نیوز‘‘ کو الودع کہہ دیا

لاہور (ویب ڈیسک )پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین اور سینئر صحافی نجم سیٹھی نے آپ نیوز کو بھی خیر باد کہہ دیاہے ۔تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی نجم سیٹھی نے ٹویٹر پرپیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ میں نے آپ نیوز چھوڑ دیا ہے لیکن میری آفتاب اقبال کے

ساتھ بہت زیادہ رغبت ہے اس لیے میں ان کی ٹیم کیلئے نیک خواہشات کااظہار کرتاہوں ۔نجم سیٹھی کا اپنے پیغام میں کہناتھا کہ میں جلد ہی سٹی نیوز نیٹورک کے چینل 24 پر پروگرام شروع کروں گا ۔یاد رہے کہ نجم سیٹھی ایک لمبے عرصہ تک نجی ٹی وی سے وابستہ رہے ہیں تاہم جس وقت انہوں نے کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کا عہدہ سنبھالا تو نجی ٹی وی میں سے اپنی خدمات واپس لے لی تھیں ۔دوسری جانب سابق چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی نجی ٹی وی کے پروگرام میں بات چیت کے دوران آبدیدہ ہوگئے۔خبریں میڈیا گروپ کے مطابق دبئی میں پی ایس ایل کے چوتھے ایڈیشن کا آغاز ہونے سے متعلق جب ان سے سوال کیا گیا کہ آپ یہاں بیٹھے ہیں۔ کیا آپ کو وہاں دورے کی دعوت نہیں دی گئی تو چند سیکنڈ کیلئے وہ گم سم رہے اور اس اچانک سوال کا جواب نہ دے سکے جس کے بعد وہ اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور بے اختیار آبدیدہ ہوگئے۔انہوں نے کہا کہ میرا فیصلہ آنے کے بعد میں چاہتا تو چیئرمین رہ سکتا تھاکوئی ہلا بھی نہیں سکتا تھا، میرے دو سال رہتے تھے لیکن اس میں وفاقی حکومت کی سپورٹ درکار ہوتی ہے۔پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے سابق چیئرمین نجم سیٹھی نے کہا ہے کہ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چوتھے سیزن میں بورڈ کو 2 ارب روپے کی آمدنی متوقع ہے۔ایک انٹرویومیں سابق چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ میں جب پی سی بی کا چیئرمین بنا تو اس وقت مجھے بتایا گیا تھا

کہ پی ایس ایل کا ایک پروجیکٹ ہے جو تعطل کا شکار ہے اور بورڈ کے پاس مہارت نہ ہونے کی وجہ سے اسے منعقد کروانا ممکن نہیں ہے۔نجم سیٹھی نے بتایا کہ سابق چیئرمین پی سی بی شہریار خان بھی بورڈ کو مالی نقصان کے پیش نظر پی ایس ایل منعقد کروانے کا خطرہ مول لینے سے ہچکچا رہے تھے۔سابق چیئرمین نے بتایا کہ انہوں نے اپنی ذمہ داری پر پاکستان کی سب سے بڑی ٹی ٹوئنٹی لیگ منعقد کروانے کا فیصلہ کیا اور بورڈ سے اس کے لیے فنڈز کے اجرا کی درخواست کی۔انہوں نے کہاکہ میں نے بورڈ کو یقین دلایا تھا کہ پی ایس ایل کی آمدن میدان سے نہیں بلکہ ٹی وی نشریات سے زیادہ آنے کے امکانات ہیں۔نجم سیٹھی نے بتایا کہ پی ایس ایل کے پہلے سیزن میں بورڈ کو 30 کروڑ روپے کا فائدہ ہوا جبکہ دوسرے سیزن میں یہ نفع بڑھتے ہوئے 50 کروڑ تک پہنچ گیا۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان کی یہ لیگ وقت کے ساتھ ساتھ ایک برانڈ بن گئی اور تیسرے سیزن میں لاہور اور کراچی میں ایک، ایک میچز منعقد کرنے کے بعد بورڈ کو 100 کروڑ روپے کا فائدہ ہوا۔سابق چیئرمین نے اپنی رائے دیتے ہوئے کہا کہ اس مرتبہ پی ایس ایل سے پی سی بی کو 200 کروڑ روپے کا فائدہ متوقع ہے۔نجم سیٹھی نے پاکستان میں پی ایس ایل میچز منعقد کروانے سے متعلق کہا کہ اس سیزن میں پاکستان میں 8 نہیں بلکہ 12 میچز منعقد کیے جانے چاہیے تھے۔انہوں نے بتایا کہ ملتان کو بھی 4 میچز کی میزبانی ملنی چاہیے تھی۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں