نوکری پر نیا آنے والا جلاد پھانسی گھاٹ کو پہلی مرتبہ دیکھ کر ہی بھاگ گیا

کولمبو(مانیٹرنگ ڈیسک) سری لنکا میں کئی دہائیاں قبل پھانسی کی سزا ختم کر دی گئی تھی تاہم گزشتہ سال صدر میتھریپالا سریسینا نے اعلان کیا کہ وہ ایک بار پھر پھانسی کی سزا لاگو کرنے جا رہے ہیں۔ ان کے اس اعلان کے بعد محکمہ جیل خانہ جات نے جلادوں کی بھرتی شروع کر دی ہے تاہم اس سلسلے میں گزشتہ دنوں ایک دلچسپ واقعہ رونما ہوا۔ میل آن لائن کے مطابق ایک جیل کی طرف سے گزشتہ ماہ فروری میں جلاد کی خالی آسامی کا اشتہار دیا گیا اور ایک امیدوار کو اس نوکری کے لیے منتخب کر لیا گیا تاہم گزشتہ دنوں جب اس امیدوار کو پہلی بار پھانسی گھاٹ دکھایا گیا تو وہ نوکری چھوڑ کر ہی بھاگ گیا۔

رپورٹ کے مطابق اس شخص کے بھاگ جانے کے باعث اس جیل کی انتظامیہ کی طرف سے دوبارہ جلاد کی نوکری کا اشتہار دیا گیا ہے جس کے لیے ایک بار پھر 100سے زائد امیدواروں نے درخواستیں جمع کروا دی ہیں۔بتایا گیا ہے کہ سری لنکن صدر نے ملک میں منشیات کا قلع قمع کرنے کے لیے پھانسی کی سزا دوبارہ لاگو کرنے کا اعلان کیا ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ انہوں نے یہ اعلان فلپائنی حکومت کی منشیات فروشوں اور نشیﺅں کے خلاف جاری مہم سے متاثر ہو کر کیا گیا ہے۔ فلپائنی صدر روڈریگوڈوٹیرٹے نے منشیات فروشوں اور نشہ استعمال کرنے والوں کو دیکھتے ہی گولی مار دینے کے احکامات جاری کر رکھے ہیں اور اب تک اس مہم میں ہزاروں لوگ پولیس کے ہاتھوں قتل ہو چکے ہیں۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں