سعودی عرب میں آج تک اونٹوں کے ساتھ جو کام مرد کرتے تھے، اب خواتین نے بھی شروع کردیا

جدہ(مانیٹرنگ ڈیسک)عرب ممالک میں اونٹ ریس ہزاروں سال سے مقبول ترین کھیل ہے اور یہ روایت آج کے جدید دور میں بھی اپنی پوری آب و تاب کے ساتھ موجود ہے۔ آج تک تو یہ کھیل صرف مردوں کے لیے ہی مخصوص رہا لیکن اب سعودی عرب میں خواتین کو بھی اس حصہ لینے کی اجازت مل گئی ہے۔ عرب نیوز کے مطابق خواتین کو اونٹ ریس میں اپنے اونٹ شامل کرنے کی اجازت ملنے پر شہزادی جمیلہ نے بھی اپنا اونٹ آج ہونے والی ریس میں دوڑانے کا اعلان کر رکھا ہے۔ شہزادی جمیلہ، شہزادہ عبدالمجید کی صاحبزادی ہیں جو سعودی عرب کے سابق فرماں رواں شاہ سعود مرحوم کے 19ویں بیٹے ہیں۔

شہزادی جمیلہ سعودی عرب کی تاریخ میں پہلی خاتون ہیں جن کا اونٹ ریس میں شرکت کر رہا ہے۔اس حوالے سے شہزادی جمیلہ نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر ایک ٹویٹ میں لکھا ہے کہ ”اونٹ ریس اب صرف مردوں سے مخصوص کھیل نہیں رہا۔ اب خواتین بھی اس میں حصہ لیں گی۔“ اس سے قبل وہ عالمی سطح پر گھڑ سواری اور دیگر مقابلوں میں بھی شرکت کرتی رہی ہیں۔ ’میکسموس‘ نامی عالمی شہرت یافتہ گھوڑا بھی انہی کی ملکیت ہے۔ شہزادی جمیلہ اس کے علاوہ بھی کئی صلاحیتوں کی حامل ہیں۔ وہ تجریدی آرٹ کی بھی بہت ماہر اور دلدادہ ہیں۔ ان کے تجریدی فن پاروں کی نمائش بھی جدہ میں منعقد ہو چکی ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں