’’ ڈاکٹر صاحب ! اب بس کریں اور واپس آجائیں ‘‘ وزیر اعظم عمران خان نے ڈاکٹر شاہد مسعود کو منانے کے لیے کسے بھیج دیا؟ جان کر آپ بھی یقین نہیں کریں گے

لاہور(نیوز ڈیسک) حکومت نے سینئر رہنماؤں نے سینئر تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود کو واپس لانے کیلئے رابطہ کرلیا، ڈاکٹر شاہد مسعود سے درخواست کی گئی کہ بس کریں، اب واپس آجائیں، آپ کے تمام تحفظات دور کیے جائیں گے، لیکن ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ میرے ساتھ جوہوا مجھے اس

کا جواب چاہیے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے صحافی عدیل وڑائچ نے اپنی رپورٹ میں کہاکہ حکومت نے ڈاکٹر شاہد مسعودکے تحفظات دورکرنے کیلئے وابطہ کرلیا ہے۔حکومت کے سینئر نمائندوں نے ڈاکٹر شاہد مسعود سے کہا کہ بس کریں اب وطن واپس آجائیں، جس پر ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ مجھے پہلے بتایا جائے میرے ساتھ یہ سارا سلوک کیوں کیا گیا؟ مجھے اس کا جواب چاہیے۔جس پر حکومتی نمائندوں نے کہا کہ آپ وطن واپس آئیں آپ کو جواب دیا جائے گا اور آپ واپس آکر اپنا پروگرام بھی شروع کریں گے۔ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ جب میں نے پروگرام چھوڑا اور باہر آیا توکچھ بین الاقوامی طاقتوں نے کہا کہ ہمیں بتائیں ہم اس معاملے کو اٹھاتے ہیں۔جس پر ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ نہیں نہیں، یہ میرا اور میرے گھر کا معاملہ ہے،ڈاکٹر شاہد مسعود نے فیصلہ کیا کہ وہ وطن آتے جاتے رہیں گے ، ان کو مختلف ٹی وی چینلز کی جانب سے پروگرام شروع کرنے کی پیشکش بھی کی گئی۔ لیکن انہوں نے فی الحال پروگرام کرنے کا کوئی ارادہ ظاہر نہیں کیا۔لیکن ڈاکٹر شاہد مسعود کو واپس لانے کی بھرپور کوشش کی جارہی ہے، تاکہ وہ واپس آئیں اور بدمعاشیہ کے خلاف جو انہوں نے اعلان جنگ کررکھا ہے، اس کیلئے پروگرام کریں۔کچھ لوگوں نے کہا کہ اگر ڈاکٹر شاہد مسعود اس طرح باہر جاکر بیٹھ جاتے ہیں،تواس سے پھر بدمعاشیہ کی فتح ہوگئی ہے۔ان کے چاہنے والے افسردہ بھی ہیں اور ناراضگی کا اظہار بھی کررہے ہیں، دوسری جانب ریاست کے اقتدار میں بیٹھے لوگوں کواحساس ہوا کہ ملکی بیانیہ کو آگے بڑھانے والوں کا ساتھ دینا چاہیے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں