عالمی ٹیلی کام کمپنی کا پاکستان میں 5 جی سروس کے آغاز کا فیصلہ

لاہور (ویب ڈیسک) چینی ٹیلی کام کمپنی ہواوے کی جانب سے پاکستان میں 5 جی سروس کے آغاز کی تیاریاں، امریکا اور جنوبی کوریا میں 5 جی ٹیکنالوجی کے آغاز کے بعد ہواوے پاکستان اور جنوبی ایشیا کے دیگر کچھ ممالک میں جلد 5 جی سروس کے آغاز کیلئے کوشاں۔ تفصیلات کے مطابق چین کی کمپنی ہواوے جنوبی ایشیائی ممالک میں کم قیمت 5 جی ٹیکنالوجی کو متعارف کرانا چاہتی ہے۔

ہواوے کو امریکا اور یورپ میں 5 جی ٹیکنالوجی کے نیٹ ورک قائم کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔ امریکا کی جانب سے ہواوے کو چینی حکومت کا جاسوس قرار دے کر اس کے فائیو جی ٹیکنالوجی نیٹ ورکس کی مختلف ممالک کی تشکیل میں رکاوٹیں ڈالی جارہی ہیں۔اس کا توڑ ہواوے نے ایشیائی ممالک میں فائیو جی کو پھیلانے کی شکل میں نکالا ہے۔ہواوے پاکستان سمیت بنگلہ دیش اور سری لنکا میں جلد 5 جی ٹیکنالوجی کا نیٹ ورک آپریشنل کرنے کا خواہاں ہے۔

جبکہ کمپنی بھارتی تحفظات دور کرنے کے لیے بھی کام کررہی ہے جہاں فائیو جی کی آزمائش رواں سال کے آخر میں شروع ہونے کا امکان ہے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان، سری لنکا اور بھارت فائیو جی سروسز کو کمرشل بنیادوں پر اگلے سال کی دوسری ششماہی کے دوران متعارف کرانے کے خواہشمند ہیں جبکہ بنگلہ دیش میں فائیو جی نیٹ ورک کا قیام 2021 تک ممکن ہوسکے گا۔

جنوبی ایشیا میں دنیا کی کل آبادی کا 25 فیصد حصہ رہائش پذیر ہے اور یہاں موبائل انٹرنیٹ کے استعمال کی شرح 2025 تک 61 فیصد تک پہنچنے کا امکان ہے، یہی وجہ ہے کہ ہواوے سمیت دیگر فائیو جی آلات بنانے والے کمپنیوں کیلئے یہ کسی سونے کے کان سے کم نہیں۔ ہواوے پہلے ہی پاکستانی مارکیٹ میں مضبوطی سے قدم جماچکی ہے جس کا اسے مستقبل میں مزید فائدہ ہوگا۔

چین اور پاکستان کے قریبی تعلقات بھی اس کمپنی کو فائیو جی کے پھیلاﺅ کے عزائم کے حوالے سے ممکنہ طور پر مددگار ثابت ہوسکتے ہیں۔ واضح رہے کہ 5 جی نیٹ ورک موجودہ موبائل انٹرنیٹ نیٹ ورک سے 100 گنا جبکہ گھروں کے براڈ بینڈ نیٹ ورک سے 10 گنا تیز ہوگا۔ فائیو جی کے ذریعے ڈھائی سے تین گھنٹے کی فلم محض ایک سیکنڈ میں ڈاؤن لوڈ کی جا سکے گی۔5 جی ٹیکنالوجی کی بدولت انٹرنیٹ کی کوالٹی مؤ100 فیصد بہتر ہونے کا امکان ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں