اس مشروب کو نہار منہ پینے سے جسم میں کیا تبدیلیاں رونما ہوتی ہیں؟

کشمش جو کہ انگور خشک کرکے بنائی جاتی ہے اور اس کی رنگت گولڈن، سبز یا سیاہ ہوسکتی ہے۔
وٹامنز، فائبر اور منرلز سے بھرپور کشمش سب سے زیادہ استعمال ہونے والا میوہ بھی ہے جو کہ کسی سپرفوڈ کی طرح کام کرتی ہے۔
کچھ لوگ اسے پانی میں بھگو کر بھی کھاتے ہیں اور یہ طریقہ کشمش کو صحت کے لیے زیادہ سود مند سمجھا جاتا ہے۔
رات بھر پانی میں بھیگے رہنے سے کشکش کے تمام منرلز اور غذائی اجزا پانی میں حل ہوجاتے ہیں اور اس میوے کو زیادہ صحت بخش بنادیتے ہیں۔
جگر اور آنتوں سے زہریلا مواد خارج کرےکشمش کو رات بھر پانی میں رکھ کر صبح پی لینا جگر اور آنتوں کی صفائی میں مدد دیتا ہے، اس میں اینٹی آکسائیڈنٹس اور غذائی فائبر اس سلسلے میں مدد دیتے ہیں۔ اینٹی آکسائیڈنٹس جگر کے افعال کو
درست رکھنے میں مدد دیتے ہیں اور جسم سے زہریلے مواد کی صفائی کا عمل تیز کرتے ہیں جبکہ فائبر آنتوں کے افعال بہتر کرکے قبض جیسے مسئلے کو دور کرتا ہے۔ یہ مشروب نہار منہ خالی پیٹ
پینا اس کے کام کو زیادہ تیز کردے گا اور پانی میں بھیگی ہوئی کشمش کو کھانا مت بھولیں۔
جسمانی توانائی بڑھائےسائنسدان اور کھیلوں کے ماہرین کا ماننا ہے کہ کشمش انرجی بار کا بہتر متبادل ثابت ہوسکتی ہے، کشمش میں فائبر اور دیگر اجزا کی بھرمار جبکہ چینی کی جگہ قدرتی مٹھاس ہوتی ہے، کشمش
کا پانی نہار منہ صبح پینا دن بھر کے لیے جسم کو توانائی سے بھرپور رکھنے میں مدد دیتا ہے جبکہ اس مشروب کو جسمانی سرگرمیوں سے پہلے بھی پیا جاسکتا ہے۔
بلڈ کولیسٹرول اور بلڈ پریشر مستحکم کرےتحقیقی رپورٹس میں یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ کشمش فائبر، پوٹاشیم، اینٹی آکسائیڈنٹس اور phytonutrients ہائی بلڈ پریشر کو کنٹرول میں رکھنے میں مدد دیتے ہیں جبکہ کشمش پانی کا
استعمال نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح بھی کم کرتا ہے، جس سے خون کی شریانوں سے جڑے امراض کا خطرہ کم ہوتا ہے۔
نظام ہاضمہ بہتر ہوتا ہےکشمش فائبر سے بھرپور میوہ ہے اور یہ پانی میں بھگو کر کھانے پر جلاب کی طرح کام کرتا ہے، جس سے قبض سے نجات ملتی ہے اور نظام ہاضمہ درست طریقے سے کام کرتا ہے۔
جسمانی وزن میں کمیکشمش قدرتی شکر سے بھرپور ہوتی ہے اور چینی کی طلب کی روک تھام کرتی ہے، مگر اعتدال میں رہ کر کھانا ہی بہتر ہوتا ہے جس سے بلڈشوگر لیول کو کنٹرول میں رکھنے کے ساتھ
کھانے کی اشتہا کو قابو کرنے میں مدد ملتی ہے، جس سے جسمانی وزن میں کمی میں مدد ملتی ہے۔
ہڈیوں کی مضبوطیکشمش میں ہڈیوں کے لیے ضروری جز Boron موجود ہوتا ہے جبکہ اس میں موجود کیلشیئم بھی ہڈیوں کی مضبوطی میں مدد دیتے ہیں، پانی میں بھگو کر کشمش کو کھانے سے یہ اجزا زیادہ بہتر
طریقے سے جسم میں جذب ہوتے ہیں، جس سے ہڈیوں کی کثافت میں بہتری آتی ہے۔
سانس کی بو دور کرےکشمش کی جراثیم کش خصوصیات منہ کی صفائی میں مدد دیتی ہیں اور سانس کی بو کا مسئلہ دور کرتی ہیں۔
خون کی کمی دور کرےخون کے سرخ خلیات بننے کے عمل کے لیے آئرن بہت ضروری ہوتا ہے، کشمش آئرن سے بھرپور میوہ ہے، جس کو پانی میں بھگو کر کھانے سے جسم میں خون کی سپلائی بڑھتی ہے اور
انیمیا کے مسئلے پر قابو پانے میں مدد ملتی ہے۔
یہ خیال رکھیںاس کو بنانے کے مختلف طریقہ کار ہیں اور یاد رکھیں کشمش کا پانی صحت بخش غذا کا اچھا اضافہ ضرور ہے مگر یہ ادویات کا متبادل ثابت نہیں ہوسکتا۔ اگر آپ کو جگر، دل، بلڈ پریشر
یا کسی قسم کی بیماری کا سامنا ہے تو ڈاکٹر سے رجوع کرکے مناسب علاج کرائیں اور صحت بخش غذا کو طرز زندگی کا حصہ بنائیں۔
نوٹ: قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں