معیشت کی بنیادی چیزوں کو ٹھیک کرنے تک سب اچھا نہیں ہوسکتا: اسد عمر

وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے نیا وزیرخزانہ مشکل وقت میں معیشت کو سنبھالے گا، آئی ایم ایف پروگرام میں جارہے ہیں آئندہ بجٹ پراثر پڑے گا، وزیراعظم آج رات یا کل کابینہ میں مزید تبدیلیوں کا اعلان کرسکتےہیں‌۔

تفصیلات کے مطابق وزیر خزانہ اسد عمر نے وزارت چھوڑنے کے اعلان کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا جوٹوئٹ کی تھی اسی سلسلے میں پریس کانفرنس کررہا ہوں، وزیراعظم نے پہلے بھی کہا تھا جو پرفارمنس دے گا وہ رہے گا۔

اسد عمر کا کہنا تھا وزیراعظم کابینہ میں ردوبدل کرنے جارہے ہیں، وزیراعظم چاہتے تھے میں کابینہ کا قلمدان لوں لیکن میں نے وزیراعظم کوکہامیں کابینہ کاحصہ نہیں رہناچاہتا، وزیراعظم نےباربارکہاملک کی بہتری کیلئے آپ ہمارےساتھ کام کریں۔

انھوں نے کہا پاکستان تحریک انصاف کےساتھ اچھا سفر گزرا، پی ٹی آئی کےنوجوان ملک کی بہتری چاہتے ہیں، سب نے بھرپور ساتھ دیا سب کا مشکورہوں۔

پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا بہتری کی طر ف جارہے ہیں اس میں کوئی شک نہیں، تھوڑا مشکل وقت ہے، ہمیں کچھ مشکل فیصلے کرنا ہوں گے، سب سے درخواست ہے مشکل فیصلے کرنے والے کا ساتھ بھی دیں، جہاں پرمعیشت کھڑی تھی اس صورتحال سے نکلنے کیلئے مشکل فیصلے کیے۔

انھوں نے کہا ضروری ہے وزارت خزانہ سے متعلق فیصلہ جلد کیا جائے، یہ نہیں ہے کہ اس وقت معیشت کے حالات بہتر ہوگئے ہیں، آئی ایم ایف پروگرام میں جارہے ہیں آئندہ بجٹ پراثر پڑے گا، نیا وزیر خزانہ ایک مشکل معیشت کوسنبھالےگا۔

اسد عمر کا کہنا تھا سازشوں کا حصہ بننے نہیں آیا تھا جو کرتا ہوں سب کے سامنے ہے، نئے وزیر خزانہ سے کوئی امید نہ رکھیں کہ 3ماہ میں دودھ کی نہریں بہیں گی، پاکستان کے وزیر خزانہ پر 22 کروڑ عوام کی ذمہ داری ہوتی ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا آج بھی یقین رکھتاہوں نیا پاکستان بنے گا اورعمران خان لیڈکریں گے، آئی ایم ایف سے جومعاہدہ کیا بہترین شرائط سے کیا ایسا کوئی نہیں کر سکتا تھا، پاکستان تحریک انصاف کے7سالہ دورمیں بہت مشکلات دیکھیں۔

ان کا کہنا تھا تحریک انصاف سےتعلق کرسی تک محدود نہیں تھا، انشااللہ عمران خان نیاپاکستان بنانے میں کامیاب ہوں گے، پاکستان تحریک انصاف کو خیرباد نہیں کہہ رہا، وزیراعظم آج رات یاکل صبح تک جوتبدیلیاں کرنا چاہتے ہیں وہ ہوجائیں گی۔

اسد عمر نے کہا کوئی نیا وزیرخزانہ بھی آئے گا تو اس کو وقت دینا پڑے گا، وزیراعظم بہتری کیلئے تبدیلیاں لارہے ہیں، معیشت کی بنیادی چیزوں کو ٹھیک کرنے تک سب اچھا نہیں ہوسکتا، معیشت کے 3 بنیادی جزہیں جن میں مسائل ہیں وہ حل طلب ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا وزارت چھوڑنے کا ایمنسٹی اسکیم سے کوئی تعلق نہیں ہے، 8 ماہ میں جو کام کیا اس میں بہت سے چیزیں ٹھیک بھی کی ہیں۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں