غلام سرور خان نے تحریک انصاف چھوڑنے کی دھمکی دے دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) غلام سرور خان نے تحریک انصاف چھوڑنے کی دھمکی دے دی، ہر صورت کابینہ کا حصہ رہنے کا مطالبہ، وزارت امور کشمیر دیے جانے کا امکان۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے وزیرِ پٹرولیم غلام سرور خان سے استعفیٰ طلب کر لیا۔ عمران خان نے اسد عمر کے استعفیٰ دینے کے بعد اب وزیرِ پٹرولیم سے استعفیٰ مانگ لیا ہے البتہ غلام سرور خان نے وزارت میں کام کرنے کے لیے مزید وقت مانگا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ غلام سرور خان نے وزارت میں کام کرنے کے لیے مزید وقت مانگا ہے۔ تاہم وزیراعظم نے غلام سرور کو وزیر چھوڑنے کا حکم دیا جس کے بعد انہوں نے تحریک انصاف چھوڑنے کی دھمکی دے دی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق غلام سرور خان نے دھمکی دی ہے کہ اگر انہیں وفاقی کابینہ سے نکالا گیا تو وہ تحریک انصاف اور حکومت کو خیرباد کہہ دیں گے۔

ذرائع کے مطابق غلام سرور خان کی دھمکی کے بعد انہیں وفاقی کابینہ کا حصہ برقرار رکھتے ہوئے ایک دوسری وزارت دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق غلام سرور خان سے وزارت پیٹرولیم لے کر وزارت امور کشمیر دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ دوسری جانب عمر ایوب کو وزارت توانائی کا عہدہ دیے جانے کا امکان ہے۔ جبکہ وزیراعظم عمران خان نے سابق وزیر خزانہ حفیظ شیخ کو نیا وزیر خزانہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ واضح رہے کہ وزیر خزانہ اسد عمر نے جمعرات کے روز ایک پریس کانفرنس کے ذریعے اپنی وزارت سے استعفیٰ دینے کا اعلان کیا۔ اس اعلان کے بعد خبریں سامنے آئیں کہ وفاقی کابینہ میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں شروع کر دی گئی ہیں۔ ایک روز کے اندر وفاقی کابینہ میں کی جانے والی تبدیلیوں کا اعلان کل کیا جائے گا۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں