ڈالر کی بلند پرواز سے اورنج لائن ٹرین منصوبے کو شدید مالی نقصان کا سامنا

ڈالر کی بلند پرواز سے اورنج لائن ٹرین منصوبے کو شدید مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے، اورنج لائن ٹرین منصوبہ بروقت مکمل نہ کرنے سے خزانے پر بوجھ بن گیا اور منصوبے کی لاگت 340 ارب روپے تک پہنچ گئی۔

ذرائع محکمہ خزانہ پنجاب کے مطابق ڈالر کی قیمت میں اضافے سے اورنج لائن منصوبے کی لاگت میں بھی اضافہ ہوا ہے، اورنج لائن ٹرین منصوبہ 340 ارب روپے تک جاپہنچا ہے۔ ذرائع پی اینڈ ڈی کا کہنا ہے کہ منصوبے میں تاخیر اور ڈالر کی زائد قیمت کی وجہ سے حکومت کو یومیہ تقریبا 6 کروڑ 90 لاکھ روپے کا جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔

منصوبے کی لاگت 2015ء میں 160 ارب 60 کروڑ روپے تھی لیکن اب حکومت کو 234 روز کا جرمانہ 15 ارب روپے تک جاپہنچا ہے جو ہر صورت ادا کرنا ہو گا، 2018ء میں ڈالر بڑھنے سے پراجیکٹ لاگت 224 ارب روپے سے تجاوز کرگئی تھی مگر موجودہ صورتحال میں تاخیر اور دیگر وجوہات کی بنا پر لاگت اب 340 ارب تک پہنچ گئی ہے۔

ذرائع خزانہ پنجاب کا کہنا ہے کہ کنٹریکٹ کے مطابق منصوبہ 27 ماہ کے اندر جون 2018ء میں مکمل ہونا تھا جبکہ پنجاب حکومت نے اورنج لائن کی تکمیل کی نئی تاریخ جولائی 2019ء دے رکھی ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں