گزشتہ ہفتے ڈالر کی قیمت میں اچانک کمی کیوں اور کیسے ہو گئی؟ اصل وجہ جان ک آپ بھی حیران رہ جائیں گے

کراچی (ویب ڈیسک) ڈالر 154روپے 50پیسے سے کم ہو کر 150روپے 50 پیسے پر آگیا ہے اور ڈالر کی اونچی اڑان میں واقع ہونے والی اس کمی کو رمضان المبارک کا اثر قرا ردیا جا رہا ہے۔ نجی ٹی وی نیوز کے مطابق ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن آف پاکستان کے سیکرٹری جنرل ظفر پراچہ کا کہنا ہے

کہ ”ماہ رمضان میں عام طور پر ڈالر کی طلب میں کمی واقع ہو جاتی ہے، چنانچہ اس وقت بھی ڈیمانڈ میں کمی واقع ہونے کی وجہ سے اس کی قیمت نیچے آنی شروع ہو گئی ہے اور اب تک 4 روپے تک کم ہو چکی ہے۔“ کرنسی ڈیلرز کا کہنا ہے کہ ”اس وقت اوپن مارکیٹ میں ڈالرکی قیمت میں کمی کا رجحان ہے ، جس کی وجہ اس کی ڈیمانڈ میں کمی ہے۔ خریدار ڈالر خریدنے میں دلچسپی کھو چکے ہیں چنانچہ اس کے نتیجے میں روپے کی قدر میں اضافہ ہونا شروع ہو گیا ہے۔رمضان المبارک اور عید کی وجہ سے بیرون ملک مقیم لوگ زیادہ رقوم پاکستان بھیجتے ہیں جس کی وجہ سے ڈالر پاکستان میں زیادہ آنے لگتا ہے اور اس کی طلب کم ہو جاتی ہے۔ اس وقت بھی ڈالر کا ’اِن فلو‘ (inflow)بہت زیادہ ہو چکا ہے لیکن اس کی ڈیمانڈ لگ بھگ صفر ہو چکی ہے۔ “ ظفر پراچہ کا کہنا تھا کہ ”اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں کمی کی ایک بڑی وجہ انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت نیچے آنا ہے۔ “

دوسری جانب انٹر مارکیٹ کے بعد امریکی ڈالر اوپن مارکیٹ میں بھی مہنگا ہوگا۔تفصیلات کے مطابق امریکی ڈالر نے ایک بار اونچی چھلانگ لگا لی۔ انٹر بینک کے بعد ڈالر اوپن مارکیٹ میں بھی مہنگا ہوگیا۔ انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر چار روپے پچاس پیسے بڑھ گئی، جس کے بعد انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر ایک سو دس روپے کا ہوگیا۔اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک روپے پچاس پیسے مہنگا ہوگیا، جس کے بعد اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت ایک سو آٹھ روپے اور نوئے پیسے ہوگئی۔دوسری جانب کاروبار کے آغاز پر اسٹاک ایکس چینچ میں 550 پوائنٹس کا اضافہ دیکھنے میں آیا، جہاں 100 انڈیکس 39 ہزار 330 پوائنٹس کی سطح پر آگیا۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں