پاکستانیوں نے انٹرنیٹ پر اس لڑکی کے لئے 70 ہزار روپے جمع کئے، لیکن کس کام کے لئے؟ جان کر بہت سے شہری غصہ ہوگئے

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) مناہل بلوچ پاکستان میں خواتین کے مسائل پر بولنے کے حوالے سے شہرت رکھتی ہیں اور وہ خواتین کو بااختیار بننے کے لیے بھی ترغیب دیتی رہتی ہیں۔ گزشتہ دنوں اس نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر خواتین کو سکوٹی خریدنے کو کہا۔ ویب سائٹ پڑھ لو کے مطابق مناہل نے لکھا کہ ”آپ یہ مت سوچیں کہ لوگ کیا کہیں گے، اگر آپ افورڈ کر سکتی ہیں تو فوراً سکوٹی خرید لیں اور آنے جانے میں دوسری کی محتاجی ختم کریں۔ اگر میں افورڈ کر سکتی تو آج ہی سکوٹی خرید لیتی۔“

مناہل نے جب یہ لکھا کہ وہ سکوٹی افورڈ نہیں کر سکتی تو ٹوئٹر پر ہی کچھ لوگوں نے اسے مشورہ دیا کہ وہ لوگوں سے چندہ دینے کی اپیل کرے۔ ان کے مشورے پر عمل کرتے ہوئے مناہل نے چندے کی اپیل کر دی۔ اس نے ٹویٹ میں لکھا کہ ”پاکستان میں چندہ جمع کرنے کا کوئی آن لائن پلیٹ فارم نہیں ہے، میں سکوٹی خریدنا چاہتی ہوں لیکن میرے پاس پیسے نہیں۔ مجھے 70ہزار روپے چاہئیں، جو شخص چندہ دینا چاہتا ہے وہ ان باکس میں میسج کرے، وہاں میں اسے اپنے بینک اکاﺅنٹ کی تفصیل دے دوں گی۔“

اس ٹویٹ کے چند دن بعد ہی مناہل نے نئی سکوٹی کے ساتھ اپنی ایک تصویر پوسٹ کی اور لوگوں کو بتایا کہ اسے چندے میں 70ہزار روپے مل چکے ہیں اوراس نے نئی سکوٹی خرید لی ہے۔ اس کو اپنی سکوٹی پر بیٹھے دیکھ کر جہاں بہت سے لوگ، بالخصوص خواتین اس کی تعریف کر رہی ہیں اور کہہ رہی ہیں کہ اس نے انہیں بہت متاثر کیا ہے اور وہ بھی اس کے نقش قدم پر چلیں گی، وہیں بہت سے انٹرنیٹ صارفین غصے کا اظہار بھی کر رہے ہیں اور کچھ بدزبان تو گالیوں تک اترے ہوئے ہیں۔ ایسے ہی ایک دریدہ دہن نے لکھا ہے کہ ”اس نے چندہ لیا ہے۔ بھیک کی بائیک پر اتنا خوش ہو رہی ہے، کیا زمانہ آ گیا ہے۔“عمر مروت نامی ایک صارف نے لکھا کہ ”یہ مناہل سکوٹی کہاں چلاتی ہے؟ اس پر ٹرک چڑھانا ہے۔“

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں