مہنگائی اور بے روزگاری سے تنگ تحریک انصاف کے کارکن نے زہر کھا لیا

چنیوٹ (ویب ڈیسک) : پاکستان تحریک انصاف کی حکومت آنے کے بعد ملک کے معاشی حالات کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا جس کو وزیراعظم عمران خان اور وفاقی حکومت نے مشکل وقت کا نام دیا اور قوم کو یقین دلایا کہ یہ مشکل وقت جلد ہی ختم ہو جائے گا اور ملک میں خوشحالی آئے گی لیکن وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال کے لیے اپنا پہلا بجٹ پیش کیا تو عوام میں ایک مرتبہ پھر سے مایوسی پھیل گئی۔

یہی وجہ ہے کہ ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اور بے روزگاری کو دیکھ کر خود پاکستان تحریک انصاف کے ورکرز بھی اپنی حکومت سے کافی نالاں ہیں۔ چنیوٹ کے رہائشی ایک نوجوان نے حالات سے تنگ آ کر خود کُشی کرنے کی کوشش بھی کی۔ تفصیلات کے مطابق چنیوٹ کے رہائشی پاکستان تحریک انصاف کے ورکر نے مہنگائی اور بے روزگاری سے تنگ آ کر خود کُشی کی کوشش کی۔
یوسف خان نے اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے کی کوشش کی تو اہل محلہ فوری طور پر اسے قریبی اسپتال لے گئے جہاں یوسف خان کی جان تو بچ گئی لیکن اسپتال ذرائع کے مطابق یوسف خان کی حالت تاحال تشویشناک ہے اور وہ زیر علاج ہے۔ یوسف خان سے متعلق معلوم ہوا کہ وہ چنیوٹ کے علاقہ توحید آباد کا رہائشی ہے۔ یوسف خان شادی شدہ اور چار بچوں کا باپ ہے۔ یوسف خان نے موجودہ مہنگائی اور بے روزگاری سے تنگ آ کر اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے کی ٹھانی اور زہریلی گولیاں کھا لی تھیں۔

یوسف خان اس وقت ڈی ایچ کیو اسپتال چنیوٹ میں زیر علاج ہے۔ اہل علاقہ اور یوسف خان کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان تحریک انصاف کا ورکر ہے اور گذشتہ کچھ عرصہ سے بے روزگار ہے ، یہی بات اُس کے دلبرداشتہ ہونے کا سبب بنی جس کے بعد اُس نے زہریلی گولیاں کھا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے کی کوشش کی تاہم بروقت اسپتال منتقلی کی وجہ سے اُس کی جان بچ گئی البتہ حالت تاحال تشویشناک ہے۔ اہل علاقہ نے یوسف خان کی حالت کا ذمہ دار موجودہ حکومت کو ٹھہرایا ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں