وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان مسلم لیگ (ن) سے متعلق کیا بات کہہ گئے؟

وفاقی وزیر توانائی تیل و گیس عمر ایوب خان نےانکشاف کیا ہے کہ بجلی کی قیمت میں فی یونٹ 3 روپے 84 پیسے اضافہ کی درخواست مسلم لیگ (ن) کی حکومت کر گئی تھی، اپوزیشن لیڈر نے قرضوں اور توانائی کے منصوبوں کے حوالے سے اپنی حکومت پر خودکش حملہ کیا،اپنی حکومت کے خلاف چارج شیٹ اپوزیشن لیڈر نے پیش…

 قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی بجٹ تقریر کا جواب دیتے ہوئےعمر ایوب خان کا کہنا تھا کہ رمضان المبارک میں بغیر کسی تعطل کے ملک بھر میں بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا گیا۔ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے بجلی کے متبادل منصوبوں میں کٹوتی کر دی کیونکہ اس سستی ترین بجلی کا ریٹ چار سینٹ فی یونٹ ہے۔ پیسکو اور دیگر ڈسٹری بیوشنز کمپنیوں میں مافیاز بیٹھے تھے،ٹرانسفارمر مافیا تھا۔  اس کے خلاف ہم نے کارروائی کی اور اس مافیا سے نجات دلائی،مسلم لیگ (ن) بجلی کے شعبے میں 806 ارب روپے کا خسارہ چھوڑ کر گئی تھی اور جاتے جاتے مسلم لیگ (ن) نیپرا کو تین روپے 84 پیسے بجلی کی قیمت میں اضافہ کی درخواست کر گئی۔  یہ فلمیں دیکھنے کی بجائے دستاویزات اور کتابیں پڑھا کریں۔

وزیر توانائی نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت سابق صدر ایوب خان کے تربیلا فور کا کریڈٹ بھی لے رہی ہے ۔ ایسا نہ کریں ذوالفقار علی بھٹو کے دور میں میرے والد گوہر ایوب خان کو گرفتار کر کے جیل میں ڈالا گیا تھا اور بھٹو کے دور میں میرے والد کو 225 سال کی سزا سنائی گئی۔ دونوں جماعتوں نے ملک کا بیڑہ غرق کیا، لوگ آٹے، گھٹی، چینی کیلئے قطاروں میں کھڑے ہوئے۔

عوام نے ہمارا انتخاب کیا کہ چوروں سے ملک و قوم کو نجات دلائیں۔ انہوں نے ایشیائی ترقیاتی بینک کے تعاون سے پیسکو، سکھر اور حیدر آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی میں الیکٹرانک فیڈرز لگانے کا اعلان کیا اور کہا کہ اس سے بجلی چوری کو چیک کیا جا سکے گا۔  اربوں ڈالر کا منصوبہ شروع ہو گا ہر میٹرپول لگے گا۔  اپوزیشن لیڈر مایوسی پھیلانا چاہتے تھے مگر خود ہی اپنی حکومت پر خودکش جیکٹ پھاڑ گئے۔ انہوں نے کہا کہ 2025ء تک بجلی میں 20 فیصد منصوبے متبادل توانائی کے منصوبے ہونگے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں