کراچی میں فائرنگ سے معروف ٹی وی اینکر مرید عباس جاں بحق

کراچی میں دو مختلف واقعات میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے نجی ٹی وی کے اینکر پرسن سمیت 3 افراد کو قتل کردیا.

بتایا گیا کراچی کے پوش علاقے ڈیفنس میں بول ٹی وی کے اینکر پرسن مرید عباس کو نشانہ بنایا گیا۔

ڈی آئی جی جنوبی شرجیل کھرل نے بتایا کہ ابتدائی تحقیقات سے شواہد ملے ہیں کہ مرید عباس کا قتل ذاتی دشمنی کا شاخسانہ ہے۔

شرجیل کھرل نے مرید عباس کے دوستوں کا حوالہ دیتے ہوئے مزید بتایا کہ اینکرپرسن کا کسی کے ساتھ پیسوں کے لین کا تنازع تھا تاہم ’مطلوبہ شخص‘ کی شناخت تحقیقات کے پیش نظر ظاہر نہیں کی جارہی۔

جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سینٹر کی ڈائریکٹر ڈاکٹر سیمی جمالی نے بتایا کہ مرید عباس کو ہسپتال میں مردہ حالت میں لایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ابتدائی طبی رپورٹ کے مطابق مرید عباس کے پیٹ اور سینے پر گولیاں لگیں۔

ڈاکٹر سیمی جمالی نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم کے بعد ہی وثوق سے بتایا جا سکتا ہے کہ کتنی گولیاں لگی۔

دوسری جانب مرید عباس کی اہلیہ زارا کے مطابق ’قتل اسی شخص کیا جس نے مرید عباس کو کال کرکے بلایا تھا اور مرید کے کاروبار کے سلسلے میں اس شخص نے پچاس لاکھ روپے دینے تھے‘۔

پہلوان گوٹھ میں فائرنگ سے دو افراد جاں بحق
دوسری جانب کراچی کے علاقے پہلوان گوٹھ میں بھی فائرنگ کے نتیجے میں 2 افراد جاں بحق ہوگئے۔

پولیس کے مطابق موٹرسائیکل پر سوار دو مسلح افراد نے پہلوان گوٹھ میں واقع بسمہ اللہ ہوٹل پرفائرنگ کی جس کے نتیجے میں عزیز وہاب اور نازک ولد غلام محمد جاں بحق ہوگئے۔

انہوں نے بتایا کہ 40 سالہ عزیز اور 22 سالہ نازک موقعے پر بھی جاں بحق ہوگئے۔

ڈی آئی ایسٹ نے بتایا کہ مسلح افراد نے کسی کو نشانہ بنائے بغیر محض خوف و ہراس پھیلنے کے لیے فائرنگ کی تھی۔

مرتضی وہاب کا مرید عباس کے قتل پر اظہار افسوس
پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ ٹی وی اینکر کا قتل شہر کا امن خراب کرنے کی کوشش ہے۔

انہوں نے کہا کہ مرید عباس سمیت دیگر افراد کے قاتلوں کو بے نقاب کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ کراچی کا امن لوٹانے میں پولیس، رینجرز اور قانون نافز کرنے والے اداروں کی قربانیاں شامل ہیں تاہم شہر کا امن تباہ کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دی جائے گی۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں