”شاہد خاقان نے جان بوجھ کر ایسا ماحول پیدا کیا کہ نیب انہیں گرفتار کرے کیونکہ ۔۔“گرفتاری میں ان کا کیا فائدہ ہے ؟ حامد میر نے بڑا دعویٰ کر دیا

اسلام آباد (آن لائن )سینئر صحافی حامد میر نے کہاہے کہ شاہد خاقان عباسی نے گزشتہ دنوں میں اپنے ساتھیوں اور وکلاءسے مشاورت کی ہے اور وہ مطمئن ہیں کہ نیب ان کے خلاف مقدمہ نہیں بنا سکتی ، انہوں نے نیب کو اشتعال دلایا کہ وہ آئیں اور انہیں گرفتار کریں کیونکہ جب وہ گرفتار ہوجائیں گے تو معاملہ عدالت میں جائے گا جہاں نیب کچھ ثابت نہیں کر سکے گی تو اس کا انہیں سیاسی فائدہ ہو گا ۔

نجی ٹی وی جیونیوز کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی حامد میر نے کہاہے کہ حکومت کے کچھ وزراء100 فیصد اعتماد کے ساتھ یہ بات کر رہے تھے کہ بہت سے لوگ گرفتار ہونے والے ہیں ، فیصل واوڈا نے ہمارے پروگرام میں بڑے اعتماد کے ساتھ یہ دعویٰ کیا تھا کہ شاہد خاقان عباسی بہت جلد گرفتار ہو جائیں گے ، ہم نے اگلے ہی دن شاہد خاقان کو اپنے پروگرام میں بلایا اور پوچھا تھا کہ آپ کو گرفتاری کا خدشہ ہے ؟ تو انہوں نے جواب دیا تھا کہ مجھے دھمکیاں کیوں دے رہے ہیں آ کر گرفتار کر لیں ، انہیں اندازہ تھا کہ گرفتار کر لیا جائے گا ۔شاہد خاقان عباسی کو نیب نے آج بلایا تھا تو بہتر تھا کہ وہ وہاں چلے جائیں اور ان کے سوالات کے جوابات دینے چاہیے تھے ، یہ پریکٹس بہت سے ن لیگ کے رہنماﺅں کی ہے ، بہت سے رہنماایسے بھی ہیں جن کو نیب بلاتی ہے تو وہ خاموشی سے چلے جاتے ہیں اور یہ بات میڈیا کو بھی نہیں پتا ہو تی ۔حامد میر کا کہناتھا کہ شاہد خاقان نے نیب کو یہ پیغام دیا کہ تم نے جو کرناہے وہ کرو میں نہیں آتا ، شاہد خاقان عباسی کواصولی طور پر نیب میں پیش ہونا چاہیے تھا، پچھلے دو دن سے وہ اپنے ساتھیوں کے ساتھ گفتگو کر رہے تھے جس سے ایسا لگتا ہے کہ وہ جان بوجھ کر نیب کو اشتعال دلا رہے ہیں کہ انہیں گرفتار کر لیا جائے ۔

سینئر صحافی کا کہناتھا کہ شاہد خاقان عباسی نے جان بوجھ کر ایسا ماحول پیدا کیا ہے کہ نیب انہیں گرفتار کرے اور ان کے علاوہ کچھ اور ن لیگ کے رہنمابھی ایسے ہی حالات پیدا کرنا چاہ رہے ہیں، گزشتہ دنوں شاہد خاقان عباسی نے کچھ وکلاءاور ساتھیوں کے ساتھ بیٹھ کر مشاورت کی تھی اور وہ مکمل طور پر پرُ اطمینا ن ہو گئے تھے کہ حکومت انہیں کسی طور پر بھی گرفتار نہیں کر سکتی اور خاص طور پر پچھلے دنوں امیر قطر نے پاکستان کا دورہ کیا جس دوران انہوں نے حکومت کے ساتھ کئی معاہدے بھی کیے اور واپس جا کر پاکستان کو قرضہ دینے کا بھی اعلان کیا ،تو یہ واضح ہو گیا کہ قطر کی حکومت اگر براہ راست اس میں ملوث ہوتی تو پاکستان کی حکومت ان سے کوئی معاہد ہ نہ کرتی ۔ حامد میر کا کہناتھا کہ شاہد خاقان عباسی اپنے طور پر مطمئن ہیں کہ نیب ان کے خلاف کوئی کیس نہیں بنا سکتی ، انہوں نے نیب کو اشتعال دلایا کہ وہ آئیں اور گرفتار کریں کیونکہ جب وہ گرفتار ہوجائیں گے تو معاملہ عدالت میں جائے گا جہاں نیب کچھ ثابت نہیں کر سکے گی تو اس کا انہیں سیاسی فائدہ ہو گا ۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
تبصرے
Loading...