’’ دنیا میں اگر کوئی چیز اسرائیل کو تباہ کر سکتی ہے تو وہ ہے شاہین میزائل۔۔۔‘‘ بھارت کو سامنے رکھ کر اسرائیل کیا گیم پلان کھیل رہا ہے؟ جان کر آپ بھی ساری گیم سمجھ جائیں گے

لاہور(نیوز ڈیسک ) سینئر تجزیہ کار ڈاکٹرشاہد مسعود نے کہا ہے کہ کچھ بھی ہو، حالات خطے کو جنگ کی طرف دھکیل رہے ہیں،اس سارے کھیل کا اہم کھلاڑی اسرائیل ہے، وہ اس وقت کہاں ہے؟ کوئی نام نہیں لے رہا،اسرائیل کے بھارت کے ساتھ اسٹریٹجک تعلقات ہیں،اسرائیل کوصفحہ ہستی سے

صرف پاکستان کا شاہین میزائل مٹا سکتا ہے۔انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ کچھ بھی کرلیں ، حالات خطے کو جنگ کی طرف دھکیل رہے ہیں،ہمیں اس تمام صورتحال کا ادراک ہونا چاہیے۔اس سارے کھیل میں ایک اہم کھلاڑی اسرائیل ہے، وہ اس وقت کہاں ہے؟اسرائیل کا کوئی نام نہیں لے رہا، فروری میں اسرائیل کا نام غلطی سے نکل گیا تھا، ہم نے ایک پائلٹ گرفتار کیا تھا ، ہم پھر بھی اسرائیل کا نام لینے کو تیار نہیں ہیں۔اسرائیل کا بھارت کے ساتھ ایک اسٹریٹجک تعلق ہے، ان کے طیاروں نے فروری میں ہمارے خلاف حصہ لیا تھا۔قومی سلامتی کونسل کا اجلاس ایک بہت بڑی کامیابی ہے لیکن اس خطے میں ایک بہت بڑا کھیل شروع ہونے جا رہا ہے۔چین کا اپنا مسئلہ ہے، کیونکہ ان کا لداخ کا مسئلہ ہے۔سلامتی کونسل کا اجلاس نہیں تھا، بلکہ سلامتی کونسل کا مشاورتی اجلاس تھا، اگر قراردادہوتی توویٹو ہوجاتی۔انہوں نے کہا کہ ایک بات پر بھارت پریشان ہے۔فتنوں کے دور کے بارے میں نبی پاک ﷺ نے فرمایا کہ ان فتنوں کو سمجھیں۔وہی بچیں گے جو اس کو سمجھیں گے۔مذہب، نسل، سب کچھ ان معاملات میں شامل ہے۔اسرائیل یہاں تک بڑے عرصے میں پہنچا ہے۔پہلے وہ عرب ممالک سے الجھا ہوا تھا ۔ایران اور ترکی پہلے اسرائیل کو سپورٹ کرتے تھے۔لیکن ان ممالک میں تبدیلیاں آگئیں ۔

اب تقریباً تمام عرب ممالک اسرائیل کے ساتھ تعلقات ہیں۔1981ء میں بھارت نے اسرائیل کے ساتھ ملکرکہوٹہ میں حملہ کرنے کا منصوبہ بنایا ، یہ ضیاء الحق کا دور تھا۔ لیکن دوبارہ 1984ء میں ایف سولہ طیارے بھارت میں پہنچ گئے اور کہوٹہ پر حملہ کرنے کی تیاری کررہے تھے۔جب ضیاء الحق کو حملے کی تیاری کا علم ہوگیا تھا۔سعودی عرب نے پاکستان کو خبر دی تھی کہ پاکستان پر حملے کی تیاری کی جارہی ہے۔ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ اب پلاننگ یہ ہورہی ہے کہ اگر نیوکلیئر بم مارا جائے تو 4منٹ نیوکلیئر بٹن دبے تو پاکستان کے پاس صلاحیت موجود ہے، کہ نیوکلیئر ہتھیار بھارت پر گر سکتے ہیں۔لیکن کوشش ہورہی ہے کہ حملہ ہوا تو دوسرے حملے کی سکت بھی موجود ہو،حملے کی صورت میں دوارب لوگ توفوری تباہ ہوجائیں گے۔شاہین میزائل 2750کلومیٹرفی گھنٹے کی رفتار سے پرواز کرے تووہ بغیر کسی رکاوٹ اور دفاعی سسٹم کے 12منٹ کے اندرسیدھا اسرائیل پر جاکر گرے گا۔اگراسرائیل سمجھتا ہے کہ کوئی ملک انہیں صفحہ ہستی سے مٹا سکتا ہے تواکلوتا پاکستان ہے۔یہ چیز اسرائیل کیلئے بہت پریشان کن ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں