پنجاب پولیس میں ن لیگ کے ہمدرد۔چھٹی کا فیصلہ ایجنسیوں نے سراغ لگایا، ایک ایس پی لیگی شخصیت کے گھر رہتا رہا

لاہور (رپورٹ:اسد مرزا)لاہور سمیت پنجاب بھر میں پولیس کے افسران اور ماتحتوں کے وسیع پیمانے پر معطل، اور تبدیل کیا جائیگا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ لاہور سمیت پنجاب بھر میں ایسے پولیس افسران و ماتحتوں کا انکشاف ہوا ہے جو مسلم لیگ ن کے رہنماؤں سے نا صرف رابطے کر کے رپورٹس دیتے ہیں بلکہ انہیں احکامات پر عمل بھی کرتے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ لاہور پولیس میں طویل عرصہ سے تعینات ایک (پی ایس پی )ایس پی اہم عہدے پر فائز ہے جو شریف فیملی کے قریب رکن صوبائی اسمبلی کے سمدھی کے گھر رہتا رہا اسکا تبادلہ بھی کیا جا رہا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پہلے فیز میں لاہور میں مسلم لیگ ن کے دور میں بھرتی اور پھر ایس ایچ او تعینات رہنے والے انسپکٹرز کو تبدیل کیا جائیگا جس کے بعد اسی کیٹگری کے پنجاب بھر سے ڈی ایس پیز کو تبدیل کیا جائیگا۔ بتایا گیا ہے کہ ڈی آئی جی آفس میں ڈسٹرکٹ انٹیلی جنس برانچ انسپکٹرز کی قسمت کا فیصلہ کرتی ہیں جو ڈی آئی بی کو خوش کر دے اسکی رپورٹر اے کیٹگری میں کر دی جاتی ہے جس پر پولیس۔ افسران انکو ایس ایچ او تعینات کرتے ہیں جبکہ رشوت نہ دینے والے بی اور سی کیٹگری میں رہ جاتے ہیں۔ اسی طرح دوسرے فیز میں لاہور سمیت پنجاب میں سابقہ دور میں ن لیگ کے دور سیاسی اثر رسوخ رکھنے والے پولیس افسران اچھی پوسٹنگ لتے رہے اور اب بھی وہ اہم عہدوں پر مزے لوٹ رہے ہیں ۔ انٹیلی جنس ایجنسیوں نے ایسے افسران کا بھی سراغ لگا لیا ہے جس کے بعد لاہور پولیس کے اہم افسران اور پنجاب کے آر پی اوز ڈی پی اوز کو آئندہ دس روز میں تبدیل کیا جا رہا ہے

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں