19 سالہ پاکستانی لڑکی نے 49 سالہ چینی شخص سے شادی کر لی

لاہور (ویب ڈیسک) : پاکستان میں بیرون ملک سے آ کر نوکریاں حاصل کرنے کا تو پتہ نہیں البتہ لوگ بیرون ملک سے آکر پاکستان میں شادیاں ضرور کر رہے ہیں۔ حال ہی میں پاکستان میں بیرون ملک سے آنے والے لڑکیوں اور لڑکوں کی پاکستانی شہریوں کے ساتھ شادیوں کے کئی قصے سامنے آئے ہیں کوئی چین سے آ کر اپنی دلہن بیاہ لاتا ہے تو کوئی جاپان سے ، کوئی دوشیزہ پاکستانی شہری کی محبت میں گرفتار ہو کر لاہور پہنچ جاتی ہے تو کوئی سیالکوٹ پہنچ جاتی ہے۔

اب بھی ایک 19سالہ پاکستانی لڑکی نے 49 سالہ چینی وانگ شنقائی سے شادی کرلی ہے۔ تفصیلات کے مطابق 49 سالہ چینی شہری وانگ شنقائی اور 19 سالہ پاکستانی شہری ثمرین سندر انڈسٹریل اسٹیٹ میں ایک ہی فیکٹری میں کام کرتے تھے ۔ملازمت کے دوران ہی دونوں میں دوستی ہوئی جو کچھ عرصہ کے بعد پیار میں بدل گئی۔ دونوں کا نکاح 3 ستمبر کو اوکاڑہ میں کیا گیا ۔

وانگ شنقائی نے رائے ونڈ میں تین مرلہ مکان لڑکی کے نام کردیا ۔ ولیمے کی رسم رائے ونڈ کے ایک نجی شادی ہال میں کی گئی۔ جہاں پولیس اور خفیہ اداروں کی ٹیمیں میڈیا سمیت موقع پر پہنچ گئیںلیکن دولہا دلہن کے پاس کسی قسم کے کاغذی ثبوت مکمل نہ ہونے اور شادی مشکوک نظر آنے کے باوجود قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں نے کوئی کارروائی نہیں کی اور یوں پاکستانی دلہن چینی دولہا کے ساتھ رخصت ہوگئی۔ میڈیا نمائندگان نے اس شادی کے حوالے سے بو بیاہتا جوڑے سے بات چیت کی۔ جس پر انہوں نے بتایا کہ ہم اس شادی پر بے حد خوش ہیں ۔ دولہا کا کہنا تھا کہ میں شادی کے بعد پاکستان میں ہی قیام کروں گا ۔ دلہے کا کہنا تھا کہ میں نے تین مرلے کا تیار مکان دلہن کو حق مہر کے طور پر دیا ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں