پاکپتن دربار اراضی کیس: نواز شریف سپریم کورٹ میں پیش

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے تا حیات قائد نواز شریف پاکپتن دربار اراضی کیس میں سپریم کورٹ میں پیش ہوگئے۔

سابق وزیراعظم پاکپتن میں دربار کے گرد اوقاف کی زمین کی اراضی کی الاٹمنٹ اور دکانوں کی تعمیر سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی عدالت میں پیش ہوئے۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے پاکپتن میں دربار کے گرد اوقاف کی زمین کی اراضی کی الاٹمنٹ اور دکانوں کی تعمیر سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی گزشتہ سماعت کے دوران سابق وزیراعظم نواز شریف کو 4 دسمبر کو ذاتی حیثیت میں طلب کیا تھا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے تھے کہ نواز شریف خود آکر وضاحت کریں کہ انہوں نے اراضی واپسی کا نوٹیفکیشن کیوں واپس لیا؟

گزشتہ روز سابق وزیر اعظم نواز شریف نے پاکپتن دربار اراضی کیس میں سپریم کورٹ میں پیش ہو نے کا فیصلہ کیا تھا۔

ترجمان مسلم لیگ (ن) کا کہنا تھا کہ نواز شریف عدالت عظمیٰ کے سامنے پاکپتن اراضی کیس میں اپنا موقف پیش کریں گے۔

ذرائع کے مطابق نواز شریف نے سپریم کورٹ میں پیش ہونے کا فیصلہ اپنی قانونی ٹیم سے مشاورت کے بعد کیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں