تحریک انصاف کا حیران کن فیصلہ، مولانا فضل الرحمان سے مدد مانگ لی، وہ بھی کس مقصد کیلئے؟

اسلام آباد (این این آئی) پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے مولانا فضل الرحمن کو دھرنا ختم کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ مولانا حکومت کی رہنمائی کریں ،،مولانا فضل الرحمن دھرنا مظاہرین کو درپیش مشکلات کا خیال کریں،اپوزیشن 22 سالہ سیاسی جدوجہد کرنے والے کو سلیکٹڈ کہتی ہے تو کہتی رہے۔
بدھ کو یہاں سینٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ اپوزیشن پر جتنے کیسز ہیں وہ عمران خان نے نہیں بنائے ،ہمارے وزرا ء نیب میں پیش ہوئے ،وزارتیں چھوڑیں ،سیاسی انتقام والا بیانیہ نہیں چلے گا۔ انہوںنے کہاکہ یہ منی لانڈرنگ کرپشن میں ملوث افراد کو بچانے کیلئے پارلیمنٹ کا سہارا لیتے ہیں ،دھرنے کی وجہ سے کشمیر کا معاملہ پیچھے ہو گیا ،ہم نے پہلے تمام فورمز پر آواز اٹھائی نہ سننے پر دھرنا دیا ،انکو پتہ ہی نہیں اور دھرنے کرنے آ گے۔

انہوںنے کہاکہ کشمیر کاز پہلی بار عالمی سطح پر بھرپور اجاگر ہوا ہے،عمران خان کشمیریوں اور مسلم امہ کی آواز بن کر ابھرے ہیں۔انہوںنے کہاکہ آزادی مارچ کی وجہ سے مسئلہ کشمیر پس پردہ چلا گیا ہے،آزادی مارچ نکالنے والے صاحب نے دھاندلی کے خلاف اپنے ضلعی الیکشن کمیشن تک سے رجوع نہیں کیا۔ انہوںنے کہاکہ مولانا فضل الرحمان نے الیکشن ٹریبونل، الیکشن کمیشن سمیت کہیں رجوع نہیں کیا۔

انہوںنے کہاکہ کشمیر کاز پہلی بار عالمی سطح پر بھرپور اجاگر ہوا ہے،عمران خان کشمیریوں اور مسلم امہ کی آواز بن کر ابھرے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ عمران خان نے 22 سال کی سیاسی جدوجہد کے بعد حکومت بنائی،اپوزیشن 22 سالہ سیاسی جدوجہد کرنے والے کو سلیکٹڈ کہتی ہے تو کہتی رہے۔سینیٹر فیصل جاوید نے مولانا فضل الرحمن کو دھرنا ختم کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہاکہ مولانا فضل الرحمن نے اپنا بھرپور احتجاج ریکارڈ کرا دیا ہے،مولانا فضل الرحمن دھرنا مظاہرین کو درپیش مشکلات کا خیال کریں،مولانا فضل الرحمن دھرنا ختم کر کے حکومت سے بات چیت کریں ۔

انہوںنے کہاکہ بھرپور سیاسی تجربہ رکھنے والے مولانا فضل الرحمن حکومت کی رہنمائی کریں۔انہوںنے کہاکہ وزیراعظم نے موسم کی خرابی کا شکار دھرنا مظاہرین کو ہرممکن سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔سنیٹر فیصل جاوید نے کہاکہ لیڈر کو دھرنا لیڈ کرنا ہوتاہے ،خود کمروں میں بیٹھ کر عوام کو بارش میں چھوڑ دیا ،انکو اب واپس جانا چاہیے ۔ انہوںنے کہاکہ مدرسے کے طلبا کو دھرنے میں لایا گیا ،مولانا صاحب ہر حکومت میں رہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ اب کال کرتے ہیں تو جواب آتا ہے مطلوبہ نمبر سے رابطہ ممکن نہیں ،برائے مہربانی چار سال بعد رابطہ کریں۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں