نوا ز شریف کی طرح ہمیں بھی ضمانت دی جائے…10ہزار قیدی عدالت جا پہنچے

سابق وزیراعظم نواز شریف کو طبی بنیادوں پر ضمانت اور رہائی ملنے کے بعد جیلوں میں قید 10 ہزار بیمار قیدیوں نے بھی ضمانت کے لیے عدالت سے رجوع کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس رسال حسن سید نے جیلوں میں 10 ہزار بیمار قیدیوں کی طبی بنیاد پر رہائی کی درخواست کی سماعت کی۔ لاہورہائیکورٹ نے درخواست چیف سیکریٹری پنجاب کو بھجوا دی۔

عدالت نے چیف سیکرٹری پنجاب کو درخواست پر فیصلے کی ہدایت کر دی ہے۔ درخواست میں کہا گیا کہ جیلوں میں 10 ہزارسے زائد قیدی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہیں۔ جیلوں میں قیدیوں کو علاج کی مناسب سہولتیں میسر نہیں ہیں۔ درخواست میں استدعا کی گئی کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کی طرح بیمار قیدیوں کو طبی بنیاد پرضمانت دی جائے۔

یاد رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے 25 اکتوبر کو سابق وزیراعظم نواز شریف کی درخواست ضمانت منظور کی تھی اور ایک کروڑ روپے کے 2 ضمانتی مچلکے جمع کروانے کا حکم دیا تھا۔

نوازشریف کی ضمانت چودھری شوگرملز کیس میں منظور کی گئی تھی۔ جس کے بعد اسلام آباد ہائیکورٹ سے بھی سابق وزیراعظم نواز شریف کو طبی بنیادوں پر 8 ہفتوں کی ضمانت دی گئی ۔ نواز شریف کی طبی بنیادوں پرضمانت اور رہائی کے بعد پنجاب حکومت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو عدالتی حکم پر دیا جانے والا ریلیف اب جیلوں میں موجود تمام بیمار قیدیوں کو دینے کا فیصلہ کیا تھا۔

اس حوالے سے مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ ‏میں نے پچھلے ایک سال میں پنجاب کی مختلف جیلوں کے دورے کیے اور قیدیوں کی فلاح وبہبود کے لیے ہدایات جاری کیں ہمارے منشور "دو نہیں ایک پاکستان ” کے تحت میں نے پنجاب کی تمام جیلوں میں موجود شدید بیمار شہریوں کی فہرست طلب کی ہے تاکہ انہیں بھی علاج کی بہترین سہولیات مہیا کی جائیں ۔ انہوں نے اپنے پیغام میں کہا کہ پنجاب حکومت جہاں عام افراد کو صحت کی بہترین سہولیات مہیا کرنے کے لیے ریفارمز لا رہی ہے وہیں پر اب پنجاب بھر کی جیلوں میں موجود بیمار قیدیوں کو بھی بہترین علاج کی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں