- Advertisement -

یوٹیلیٹی اسٹورز پر پانچ بنیادی اشیاء پر سبسڈی جاری رکھنے کی منظوری

- Advertisement -

اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے پانچ لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے اور افغانستان سے پاکستانی روپے میں درآمدات کی اجازت دے دی۔ یوٹیلیٹی اسٹورز پر پانچ بنیادی اشیاء پر سبسڈی کو جاری رکھنے کی منظوری دے دی گئی ہے۔
وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں کمیٹی نے لگژری اور غیر ضروری اشیاء کی درآمد پر 30 جون 2022 سے پابندی کے خاتمے کی توثیق کی۔
وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی زیر صدارت ہونیوالے کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں افغانستان سے پاکستانی روپیوں میں درآمدات کی اجازت کے علاوہ پانچ لاکھ ٹن گندم درآمد کرنیکی بھی منظوری دے دی ہے۔
اقتصادی رابطہ کمیٹی نے یوٹیلیٹی اسٹورز پر پانچ بنیادی اشیاء پر سبسڈی کو جاری رکھنے کی منظوری دے دی گئی ہے علاوہ ازیں جانوروں میں لمپی اسکن بیماری کے پیش نظر نیشنل ڈیزیز ایمرجنسی نافذ کرنے سے متعلق سمری کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد وزارت نیشنل فوڈ سیکورٹی کو چاروں صوبائی چیف سیکرٹریز اور این ڈی ایم اے کے ساتھ ملاقاتوں و مشاورت کے ساتھ لاگت میں شراکتداری کا پلان(کاسٹ شیئرنگ پلان) تیار کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔
ای سی سی نے ٹیلی کام لائسنس کے اجراء کے لیے کمیٹی قائم کردی ہےاجلاس میں افغانستان سے پاکستانی کرنسی(پاکستانی روپے) میں درآمدات کی منظوری دی گئی ہے جس کیلئے امپورٹ پالیسی آرڈر میں ترامیم کی جائے گی۔
اس کے علاوہ اجلاس میں ورلڈ فوڈ پروگرام کے تحت افغانستان کیلئے 1 لاکھ 20 ہزار ٹن گندم درآمد کی منظوری بھی دیدی گئی ہے۔
ای سی سی کے اجلاس میں ہیوی الیکٹریکل کمپلیکس کے مارک اپ کی ادائیگی کیلئے فنڈز منظوری بھی دی گئی ہے۔
اجلاس میں وزارت اقتصادی امور اور وزارت منصوبہ بندی کی تکنیکی ضمنی گرانٹ کی منظوری اوربینک آف خیبر کو ہائر ایجوکیشن کمیشن کی طرف سے مارک اپ کی ادائیگی کیلئے فنڈز فراہم کرنے کی منظوری بھی دی گئی ہے اس کے علاوہ مالی سال 2021-22 کیلئے ملنے والی غیر ملکی امداد کو توپے میں استعمال کیلئے ٹیکنیکل سپلمنٹری گرانٹ جاری کرنے کی منظوری بھی دیدی گئی ہے۔