- Advertisement -

نانگا پربت پرپھنسے کوہ پیماوں کو ریسکیو کرا لیا گیا

- Advertisement -

وزیر اعلی گلگت بلتستان کی ہدایت پر نانگا پربت میں پھنسے دو پاکستانی کوہ پیماوں کو آرمی ایوی ایشن کے ہیلی کاپٹر سے ریسکیو کر لیا گیا ہے۔
دونوں کوہ پیما گزشتہ روز پاکستان کی دوسری بلند ترین چوٹی نانگا پربت سر کرنے کے بعد واپسی پر 7 ہزار میٹر کی بلندی پر پھنسے تھے۔
دونوں کوہ پیماوں کو کیمپ 1 سے آرمی ایوی ایشن کے ہیلی کاپٹر پر ریسکیوکرکے گلگت پہنچا دیاگیا ہےوزیر اعلی گلگت بلتستان اور چیف سیکریٹری کے احکامات پر ڈپٹی کمشنر دیامر 3 روز مسلسل بیس کیمپ پولیس اور ریسکیو ٹیم کیساتھ رابطے میں رہے۔
کنٹرول روم منیجمنٹ اور بیس کیمپ میں موجود ہائی الٹیچیوڈ پولیس,مونٹینئرز اور ریسکیو ٹیم کے مابین بہترین کوارڈنیشن کہ وجہ سے پھنسے کوہ پیماوں کو ٹریس کرنے میں کامیابی ملی۔
کوہ پیما شیروز کاشف اور فضل علی کو ریسکیو کرنے کیلئے چلاس اور نانگاہ پربت میں کنٹرول روم قائم کیا گیا تھا جہاں سے اس پورے ریسکیو اپریشن کو مانیٹر کیا گیا۔کوہ پیما شیروز کاشف اور فضل علی کو ریسکیو کرنے میں حکومت آرمی اور سول انتظامیہ نے دن رات محنت کیا.
وزیر اعلی گلگت بلتستان اور چیف سیکریٹری نے ریسکیو اپریشن میں بہترین کوارڈنیشن پر ڈپٹی کمشنر دیامر اور ان کی پوری ٹیم کو شاباش دی۔دونوں کوہ پیماوں کی باحفاظت واپسی تک ڈپٹی کمشنر دیامر فیاض احمد کوہ پیماوں کے اہلخانہ سے مکمل رابطے میں رہے۔
کوہ پیما شیروز اور فضل علی کے اہلخانہ نے ریسکیو اپریشن میں بہترین رابطہ قائم کرنے اور عملی اقدامات اٹھانے پر صوبائی حکومت پاک فوج اورڈپٹی کمشنر دیامر کا شکریہ ادا کیا۔
نانگاہ پربت میں پھنسے کوہ پیماوں کی ریسکیو کیلئے قائم کنٹرول روم میں مسلسل رابطہ اور بروقت معلومات کی فراہمی پر ڈپٹی کمشنر دیامر نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر ٹوریزم فیاض الرحمان ,کنٹرول روم عملہ اور ہائی الٹیچیوڈ پولیس کی کارکردگی کو سراہا