عظمیٰ تشدد کیس، کہانی ختم، قانون ہار گیا، پیسہ جیت گیا،عظمیٰ خان نے ڈیل کر لی

عظمیٰ تشدد کیس، کہانی ختم، قانون ہار گیا، پیسہ جیت گیا،عظمیٰ خان نے ڈیل کر لی

رپورٹ کے مطابق عظمیٰ خان تشدد کیس میں اداکارہ نے ملک ریاض کے ساتھ ڈیل کر لی

عظمیٰ تشدد کیس میں ادارکارہ عظمیٰ خان کی ملک ریاض سے ڈیل کی غیر مصدقہ اطلاعات سامنے آ رہی ہیں، ذرائع کے مطابق عظمیٰ خان نے ڈیل کر لی ہے اور اس ڈیل کے بعد وہ کیس واپس لے لیں گی

ذرائع کے مطابق عظمیٰ خان نے ملک ریاض کے ساتھ لاہور پولیس کے ایک سینئر افسر کے دفتر میں ڈیل کی اور یہ ڈیل بیس کروڑ میں ہوئی ہے جس میں سے ملک ریاض نے 5 کروڑ عظمیٰ خان کو نقد دیئے ہیں، جبکہ پانچ پانچ کروڑ کے 3 چیک عظمیٰ خان کو دیئے گئے ہیں

ذرائع کے مطابق اس ڈیل میں لاہور پولیس کے ایک افسر نے اہم کردار ادا کیا ہے،عظمیٰ خان اس ڈیل کے بعد دبئی چلی جائیں گی، دبئی میں ایک فلیٹ بھی ملک ریاض کی جانب سے عظمیٰ خان کو دیا جائے گا

قبل ازیں عظمیٰ خان نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں ڈیل کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ میں ایک بات سن رہی ہوں کہ میری صلح ہو گئی ہے اور میں پاکستان چھوڑ کر دبئی شفٹ ہو گئی ہوں ، ایسی بات نہیں میں لاہور میں ہوں،

عظمیٰ خان کا کہنا تھا کہ آئی جی پنجاب مجھ سے ملیں ،پولیس کے کچھ لوگ صلح کے لئے بول رہے ہیں اور کچھ میرے ساتھ کھڑے ہیں، میں چاہتی ہوں کہ آئی جی پنجاب کا جو فیصلہ ہو گا وہ مانوں گی، وہ صلح کا کہیں گے توصلح کر لوں گی،میرے ساتھ جو ہوا مجھے معافی نہیں مل رہی ہے اور بار بار یہی کہا جا رہا ہے کہ لوگوں کی طرف سے کہ ڈیل کر لیں، پیسوں‌ پر بات ختم کر لیں، آپ کے لئے اچھا نہیں ہو گا، آپ کی جان کو خطرہ ہو سکتا ہے

عظمیٰ خان کا مزید کہنا تھا کہ میرے ساتھ بہن بھی ہے، ابھی تو ٹھیک ہوجائے گا لیکن سال بعد بھی وہ نقصان پہنچا سکتے ہیں،کسی کیس میں ڈال دیں گے، کچھ لوگ کہہ رہے ہیں کہ مروا دیں گے، مر تو میں ویسے ہی گئی جو ان لوگوں نے میرے ساتھ کیا،پوری دنیا میں بدنام کر دیا، میں تو مرنے کے مقام پر تھی جو وہ کر کے گئے تھے، میں دو دن کمرے سے نہیں نکلی، انہوں نے ویڈیو لیک کی پھر میں انسٹا گرام اور فیس بک کا اکاؤنٹ ڈیلیٹ کیا

واضح رہے کہ عظمیٰ تشدد کیس میں پولیس نے کاروائی کا اعلان کرتے ہوئے ملک ریاض کی بیٹی آمنہ عثمان زوجہ ملک عثمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے ،ذرائع کے مطابق یہ مقدمہ تھانہ ڈیفینس سی لاہور میں درج کیا گیا ہے

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
تبصرے
Loading...