پنجاب حکومت نے 4 ہفتوں کے سخت لاک ڈاؤن کی سمری مستردکردی

لاہور (ویب ڈیسک) پنجاب حکومت نے 4 ہفتوں کے سخت لاک ڈاؤن کی سمری مسترد کردی، محکمہ پرائمری ہیلتھ پنجاب نے لاہور میں کورونا کی رینڈم سیمپلنگ کے بعد خطرناک صورتحال آگاہ کیا تھا، سمری میں لوگوں کو سختی سے گھروں میں محدود کرنے اور4 ہفتوں کیلئے سخت لاک ڈاؤن کی تجویز دی تھی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق محکمہ صحت پنجاب نے فیصلہ سازوں کو خبردارکیا ہے کہ محکمہ پرائمری ہیلتھ پنجاب نے 15 مئی کو وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو سمری ارسال کی تھی، جس میں حکومت کو آگاہ کیا گیا کہ لاہور میں کورونا مریضوں کی تعداد کا اندازہ 6 لاکھ 70 ہزار ہے۔

جبکہ لاہور کا کوئی بھی قصبہ اور رہائشی علاقہ کورونا وائرس سے محفوظ نہیں۔ رینڈم سیمپلنگ میں معلوم ہوا ہے کہ لاہور کا کوئی رہائشی علاقہ کورونا سے محفوظ نہیں ہے۔
رینڈم سیمپلنگ لاہور کے ہاٹ سپاٹ، رہائشی، دفاترز اور عام جگہوں پر کام کرنے والے لوگوں میں کی گئی، اس دوران اسمارٹ سیمپلنگ میں 6.1 فیصد اور سیمپلنگ میں 5.1 فیصد کیسز مثبت رپورٹ ہوئے۔

بعض علاقوں میں 14 فیصد سے بھی زیادہ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔، جس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ لاہور میں کورونا وائرس خطرناک حد تک پھیل چکا ہے۔ سمری میں تجویز دی گئی کہ میں چار ہفتوں کیلئے سخت لاک ڈاؤن کیا جائے۔ سمری میں لوگوں کو سختی سے گھروں تک محدود کرنے کی تجویز دی گئی۔ سمری میں 50 سال سے زائد عمر افراد کو گھروں میں ہی قرنطینہ کیا جائے یا پھر ان کو گھروں میں علیحدہ رکھنے کی سفارش کی گئی۔ بتایا گیا ہے کہ حکومت پنجاب نے سخت لاک ڈاؤن کرنے کی سمری مسترد کردی۔ دوسری جانب ملک بھر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے 2964 نئے کیسز، مزید 60 اموات رپورٹ ہوئی ہیں جس کے بعد متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 72ہزار 460 ، اموات 1543 ہو گئی ہیں۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
تبصرے
Loading...