پاکستان کی معیشت میں بہتری کے گُن اب آئی ایم ایف بھی گانے لگی، خوشخری جانئے

عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) نے کورونا وبا کے سبب شدید متاثر ہونے والی پاکستان کی معیشت میں بہتری کی خوشخبری سنا دی۔
عالمی مالیاتی ادارے کے مطابق اگلے سال پاکستان کی معیشت بتدریج سنبھل جائے گی۔ اپنی رپورٹ میں آئی ایم ایف نے کورونا وائرس کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال میں اٹھائے گئے حکومتی اقدامات کی تعریف کی ہے۔
رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومت پاکستان کے اٹھائے جانے والے اقدامات معیشت کے لیے بہتر ثابت ہوں گے، پاکستان کی حکومت نے وقت کے ساتھ لاک ڈاون میں نرمی سے معیشت کو نقصان سے بچایا ہے۔
اس سے قبل ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی) نے اپنی رپورٹ میں بتایا تھا کہ کورونا وائرس پھیلنے سے پاکستان کی معیشت کو 16.387 ملین ڈالر سے لے کر 4.95 بلین ڈالر یا جی ڈی پی کے 0.01 فیصد سے 1.57 فیصد تک کا نقصان ہوسکتا ہے۔ اقوام متحدہ کا تخمینہ ہے کہ وائرس کی وجہ سے بین الاقوامی سیاحت تین فیصد کم ہو گی جس کے نتیجے میں عالمی سطح پر 50 بلین ڈالر تک کا نقصان ہوسکتا ہے۔
خیال رہے کہ بجٹ سے قبل پیش کیے گئے اقتصادی سروے کے مطابق وفاقی حکومت نے بجٹ خسارے پر قابو پانے کیلئے 2080 ارب روپے قرض لیا ہے۔
اقتصادی سروے کے مطابق مارچ 2020 کے آخر میں مقامی قرض 22 ہزار 478 ارب روپے ریکارڈ کیا گیا۔ رواں سال کے پہلے 9 ماہ میں بیرونی قرض میں 3ارب ڈالرکا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
تبصرے
Loading...