حضرت عیسٰی علیہ السلام کے آنے کی تمام پیشنگوئیاں پوری ہونے والی ہیں، یہودیوں نے ایسا مطالبہ کردیا جو قیامت کی نشانیوں میں سے ہے، ایسا کیا مطالبہ ہے؟

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) مسلمان بھی عقیدہ رکھتے ہیں کہ قیامت بپا ہونے سے قبل حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا دوربارہ ظہور ہو گا۔ اب اس حوالے سے یہودی علماءکے ایک گروپ نے ایک انتہائی حیران کن دعویٰ کر دیا ہے۔ڈیلی سٹار کے مطابق ربیوں (یہودی مذہبی پیشواﺅں)کے ایک گروپ، جس کا نام ’سنیہڈرین‘(Sanhedrin)نے دعویٰ کیا ہے کہ یروشلم میں تیسرا ہولی ٹیمپل تعمیر ہونے کے بعد حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا دوبارہ ظہور ہو گا اور اس کے بعد قیامت برپا ہو جائے گی۔ اس گروپ نے آئندہ ہفتے ہوئے والے یروشلم کے میئر کے انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں اوفیر برکووک اور موشی لیون کو خط لکھے ہیں اور ان سے مطالبہ کیا ہے کہ ان میں سے جو بھی الیکشن جیت کر یروشلم کا میئر بنے وہ شہر میں تیسرا ہولی ٹیمپل تعمیر کروائے۔

رپورٹ کے مطابق یروشلم میں قدیم زمانوں میں دو ہولی ٹیمپل تعمیر کیے گئے تھے جو اب معدوم ہو چکے ہیں۔ انہیں بیبلون اور قدیم رومی باشندوں نے جنگوں کے دوران مسمار کر دیا تھا۔ پاﺅل بیگلے نامی مسیحی پادری، جو قیامت کے متعلق اپنی پیش گوئیوں کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں، انہوں نے بھی ربیوں کے اس گروپ کے دعوے کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ حضرت عیسیٰ کی دوبارہ آمد کے کچھ ہی عرصہ بعد قیامت بپا ہو جائے گی۔ میرے خیال میں اس کے بعد کہنے کو کچھ باقی نہیں بچتا۔“ارمجدون کی پیش گوئیاں کرنے والے آئروین بیکسٹر نامی مذہبی پیشوا کا بھی اپنی ایک پیش گوئی میں کہنا ہے کہ ”یروشلم میں تیسرا ہولی ٹیمپل دنیا کے آخری سات سالوں میں تعمیر کیا جائے گا۔“

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں