واٹس ایپ گولڈ کیا ہے اور کیا اسے اپ ڈیٹ کرنا چاہئے؟

اسلام آباد (ویب ڈیسک) : واٹس ایپ گولڈ نے پاکستان بھر میں اسمارٹ فون صارفین کو پریشان کر کے رکھ دیا ہے۔ لیکن حال ہی میں موبائل صارفین کو خبردار کیا گیا ہے کہ واٹس ایپ گولڈ کوئی ایپلی کیشن نہیں بلکہ در اصل ایک وائرس ہے۔ واٹس ایپ گولڈ کے نام سے افواہوں کا سلسلہ 2016ء میں شروع ہوا جب یہ دعویٰ کیا گیا کہ معروف میسجنگ ایپلی کیشن واٹس ایپ میں بہت سے ایسے خفیہ فیچرز موجود ہیں جنہیں عام صارف استعمال نہیں کر سکتا بلکہ ان فیچرز تک رسائی وہی موبائل صارفین حاصل کر سکتے ہیں جو واٹس ایپ گولڈ استعمال کرتے ہیں۔

اس افواہ کی مدد سے اسمارٹ فون صارفین کو واٹس ایپ کا گولڈ ورژن ڈاؤن لوڈ کرنے پر اُکسایا گیا۔ لیکن ڈاؤن لوڈ کرنے کے بعد صارفین کو معلوم ہوا کہ یہ کوئی ایپلی کیشن نہیں بلکہ ایک وائرس ہے۔

تاہم کچھ وقت گزرنے کے بعد وقتا فوقتاً یہ میسج دوبارہ وائرل ہونے لگا اور موبائل فون صارفین واٹس ایپ گولڈ کا شکار ہونے لگے۔اس حوالے سے حال ہی میں ایک اور افواہ گردش کر رہی ہے جس میں کہا گیا کہ Martinelli کے نام سے واٹس ایپ صارفین کو ایک ویڈیو کال موصول ہو گی جس سے صارفین کے موبائل فون ہیک ہو جائیں گے۔

کچھ افواہوں کے مطابق واٹس ایپ کا لمیٹڈ ایڈیشن متعارف کروایا گیا ہے جس میں ایک وقت میں 100 تصاویر بھیجنے اور پیغام بھیجنے کے بعد ڈیلیٹ کرنے کی سہولت موجود ہے۔ واٹس ایپ صارفین کو موصول ہونے والے اس پیغام میں صارفین کو ایپلی کیشن اپ گریڈ کرنے کی طرف راغب کیا جاتا ہے۔ اس لنک پر کلک کرنے سے ایک ویب پیج کُلھتا ہے جو وائرس اور نقصان مواد سے بھرا ہوتا ہے۔ واٹس ایپ صارفین کو ہدایت کی گئی ہے کہ ایسے کسی لنک پر کلک نہ کریں بلکہ ایسا کوئی بھی پیغام موصول ہونے پر فوری طور پر ڈیلیٹ کر دیں۔ کیونکہ معروف مسیجنگ ایپلی کیشن واٹس ایپ کے فی الوقت صرف دو ورژن موجود ہیں، جن میں واٹس ایپ اور واٹس ایپ بزنس شامل ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں