آپکے ریمارکس کی وجہ سے اپوزیشن مجھ سے استعفیٰ مانگ رہی ہے: ڈاکٹر یاسمین راشد، آپ کا کیرئیر بے داغ ہے ،کام جاری رکھیں: چیف جسٹس

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے چیف جسٹس آف پاکستان سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے ریمارکس پر اپوزیشن استعفے کا مطالبہ کر رہی ہے، ڈاکٹر یاسمین راشد کی بات سنتے ہی چیف جسٹس آف پاکستان کا کہنا تھا کہ کہ آپ کو استعفیٰ نہیں دینے دیں گےآپ کا پورا کیرئیر بے داغ ہے، کہ ہمارے خلاف بھی مہم چلائی جا تی ہے لیکن کیا ان حالات میں کام کرنا چھوڑ دیں؟ آپ کام جاری رکھیں ، ہم آپکو مستعفی نہیں ہونے دیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق لاہور سپریم کورٹ رجسٹری میں نجی یونیورسٹی کے کیس کی سماعت کی گئی ، سماعت پر صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد عدالت کے روبرو پیش ہوئی ، پیشی کے دوران کمرہ عدالت میں ڈاکٹر یاسمین راشد نے چیف جسٹس آف پاکستان سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے ریمارکس پر اپوزیشن استعفے کا مطالبہ کر رہی ہے، ڈاکٹر یاسمین راشد کی بات سنتے ہی چیف جسٹس آف پاکستان کا کہنا تھا کہ کہ آپ کو استعفیٰ نہیں دینے دیں گے آپ کا پورا کیرئیر بے داغ ہے، کہ ہمارے خلاف بھی مہم چلائی جا تی ہے لیکن کیا ان حالات میں کام کرنا چھوڑ دیں؟ آپ کام جاری رکھیں ، ہم آپکو مستعفی نہیں ہونے دیں گے۔

خیال رہے گزشتہ روز سپریم کورٹ میں میئر لاہور اور ایل ڈی اے کے اختیارات کے حوالے سے کیس کی سماعت ہوئی ، سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے پنجاب حکومت سے جواب طلب کیا کہ میئر لاہور اور ایل ڈی اے کو اختیارات نہ دینے پر جواب طلب کر لیا ، دوران سماعت چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ فنڈز کے بغیر مقامی حکومتیں کیسے کام کر سکتی ہیں،اصل کام لوکل باڈیز کرتی ہیں لیکن پاکستان میں انہیں اختیارات ہی نہیں دیئے جا رہے، رجب طیب اردغان سے جب میری ملاقات ہوئی تو انہوں نے مجھے بتایا کہ میں بطور صدر اور وزیر اعظم کے عہدوں پر گزشتہ سولہ سالوں سے کام کر رہا ہوں لیکن استنبول کے میئر کے طور پر سے بہتر پرفارم کر سکا ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں